The news is by your side.

Advertisement

نئے گھر کی تعمیر کے لیے 2 درخت لگانا لازمی قرار، لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ جاری

لاہور: ہائی کورٹ نے سرسبز پاکستان کے حوالے سے بڑا فیصلہ کیا ہے، جسٹس جواد حسن نے 78 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کر دیا، نئے گھر کی تعمیر کے لیے 2 درخت لگانا لازمی ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ نے تفصیلی فیصلہ جاری کرتے ہوئے نئے گھر کی تعمیر کے لیے 2 درخت لگانا لازمی قرار دے دیا ہے۔

عدالت نے حکم دیا ہے کہ درخت نہ لگانے والی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے نقشے منظور نہ کیے جائیں، عدالت نے درخت کاٹنے والوں کو بھاری جرمانے کرنے کا بھی حکم جاری کیا۔

اپنے تفصیلی حکم نامے میں عدالت نے کہا کہ درخت نہ لگانے والی فیکٹریوں کے این او سی منسوخ کیے جائیں، تمام محکموں کے افسران درخت لگانے سے متعلق سالانہ رپورٹ جاری کریں۔

فیصلے میں کہا گیا کہ تعلیمی اداروں، اسپتالوں، پارکنگ سمیت عوامی مقامات پر درخت لگائے جائیں، درخت لگانے اور کاٹنے کے لیے متعلقہ اتھارٹی سے رجوع لازمی ہوگا، پنجاب حکومت زیادہ سے زیادہ درخت لگانے کے حوالے سے آگاہی مہم چلائے۔

عدالت نے کہا کہ پنجاب حکومت درختوں کے حوالے سے متعلقہ قوانین پر نظر ثانی کرے، محکمہ جنگلات، پی ایچ اے (پارکس اینڈ ہارٹیکلچر اتھارٹی) متعلقہ اداروں کو درختوں پر سہولت فراہم کریں، غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ یہ پاکستان کے مستقبل کا معاملہ ہے، زیادہ سے زیادہ درخت لگائے جائیں۔ دریں اثنا، لاہور ہائی کورٹ نے درخت لگانے کے حوالے سے حکومتی پالیسی کو سراہا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں