لاہور میں چوری کے الزام میں دو خواتین پر وحشیانہ تشدد، ملزمان گرفتار -
The news is by your side.

Advertisement

لاہور میں چوری کے الزام میں دو خواتین پر وحشیانہ تشدد، ملزمان گرفتار

لاہور: شہرِ لاہور کے نواحی علاقے جلو موڑ میں کپڑے کی دکان سے چوری کے الزام میں پکڑی گئی 2 خواتین کو دکان داروں نے ڈنڈوں، لاتوں، مکوں اور تھپڑوں کی بارش کر کے بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں کپڑوں کی ایک دکان پر دو خواتین پر بد ترین تشدد کرنے والے دونوں ملزمان عدنان اور اعجاز کو گرفتار کر لیا گیا ہے، پولیس ان سے تفتیش کر رہی ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ دو خواتین کو دکان داروں نے بٹھا رکھا ہے اور انھیں ڈنڈے، لاتوں اور تپھڑوں سے پیٹا جا رہا ہے، خواتین کا دوپٹا بھی کھینچا گیا، چہرے پر بھی تھپڑ مارے گئے جب کہ غلیظ گالیاں بھی دی گئیں۔

ویڈیو میں تشدد کرتے نظر آنے والوں میں ایک کبڈی فیڈریشن کا اعجاز مناواں بھی شامل ہے، جسے وزیر، اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی جانب سے نوٹس لیے جانے کے بعد گرفتار کر لیا گیا ہے۔


یہ بھی پڑھیں:   جیل میں قید خواتین اپنا جرم بے گناہی ثابت ہونے کی منتظر


خیال رہے کہ ظالمانہ تشدد کی ویڈیو وائرل ہوتے ہی وزیرِ اعلیٰ نے واقعے کا فوری نوٹس لیتے ہوئے پولیس کو ملزمان کی گرفتاری کا حکم دے دیا تھا۔

واقعے میں ملوث ملزمان کو پولیس گرفتار کر کے مقدمہ درج کر چکی ہے، ڈی آٸی جی انویسٹی گیشن نے ملزمان کی تفتیش جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی۔

واضح رہے کہ دکان داروں کا کہنا تھا کہ مذکورہ خواتین نے مختلف دکانوں سے مبینہ طور پر 10 سے 12 ہزار مالیت کے لیڈیز ریڈی میڈ کپڑے چرائے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں