مقبوضہ کشمیر،امام مسجد سمیت تین کشمیری رہنما گرفتار -
The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر،امام مسجد سمیت تین کشمیری رہنما گرفتار

سری نگر: مقبوضہ کشمیر کے ضلع کشتواڑ میں پاکستان کی حمایت میں نعرے لگانے پر بھارتی فوجیوں نے امام مسجد سمیت تین حریت پسند مقامی رہنماؤں کو گرفتار کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

تفصیلات کے مطابق مذکورہ واقعہ ضلع کشتوار کی مرکزی مسجد کے قریب پیش آیا جب نماز کی ادائیگی کے بعد نمازیوں نے پاکستان کے حق میں نعرے بلند کیے تو بھارتی فوجیوں نے روایتی بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے نمازیوں کو ظلم و تشدد کا بنایا۔

اسی سے متعلق : بھارتی فوج کی بربریت،نوجوان حریت پسند برہان وانی شہید

بعد ازاں بھارتی فوج نے پاکستان زندہ باد کہنے کے جرم مین امام مسجد سمیت تین افراد کو حراست میں لے کربہیمانہ تشدد کرتے ہوئے اپنے ہمراہ نامعلوم مقام پرلے گئی جس پر اہل علاقہ احتجاج کرتے ہوئے اپنے گھروں سے نکل آئے اور بھاری فوج کے خلاف کے بلند شگاف نعرے بازی کی۔

یہ خبر پڑھیں : کشمیر میں بھارتی مظالم کی اقوام متحدہ تحقیقات کرے، وزیراعظم

کشمیری میڈیا سروس کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے کئی علاقوں میں آج 79 ویں روز گذرنے کے باوجود تاحال کرفیونافذ ہے جس کی وجہ سے لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں سڑکیں اور کاروباری مراکزبند ہیں جب کہ موبائل سروس اور نیٹ پربندش کے باعث لوگوں کو اذیت اور کوفت کا سامنا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں : بان کی مون کا زخمی کشمیریوں کی تصاویر دیکھ کر صدمے کا اظہار

واضح رہے بھارتی فوج کے ہاتھون شہید ہونے والے کشمیری نوجوان کی نماز جنازہ بعد نمازجمعہ ادائیگی کے بعد سے بارہ مولا سمیت کئی کشمیری علاقون میں کشیدگی میں اضافہ ہو گیا ہے۔

یہ پڑھیے : کشمیری نوجوان کا جنازہ،رقت آمیز مناظر

یاد رہے کہ اناسی روز سے جاری ظلم کی تازہ لہر میں اب تک ایک سو پندرہ سے زائد کشمیری شہید ہوچکے ہیں،بھارتی فوج کی جانب سے پیلٹ گنز کے استعمال سے پانچ سو سے زائد افراد بینائی سے بھی محروم ہوگئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں