The news is by your side.

امریکا میں ٹرک سے 46 افراد کی لاشیں برآمد

واشنگٹن: امریکا میں غیر قانونی پناہ گزینوں سے بھرے ٹرک سے 46 افراد کی لاشیں ملی ہیں، تمام افراد کی موت ہیٹ اسٹروک اور گھٹن کے باعث ہوئی۔

امریکی میڈیا کے مطابق ریاست ٹیکسس کے شہر سان انتونیو میں ایک ٹرک سے کم از کم 46 افراد کی لاشیں ملی ہیں، یہ غیر قانونی پناہ گزین تھے جن کو ٹیکسس کے جنوب میں اسمگل کیا جا رہا تھا۔

حکام نے دیگر 16 افراد کو ٹرک سے مقامی اسپتال بھی منتقل کیا ہے۔

سان انتونیو کے فائر کنٹرول کے محکمے کے مطابق ان افراد کی موت ہیٹ اسٹروک اور گھٹن کے باعث ہوئی تاہم مرنے والوں میں بچے شامل نہیں۔

فائر چیف چارلس ہڈ کا کہنا ہے کہ جن متاثرین کو اسپتال پہنچایا گیا وہ ہیٹ اسٹروک اور گھٹن کا شکار تھے، یہ ریفریجیریٹڈ ٹریکٹر ٹرالر تھا لیکن بظاہر اس کا کوئی اے سی کام نہیں کر رہا تھا۔

مقامی میڈیا رپورٹ کے مطابق ٹرک ریاست کے جنوب مغربی علاقے میں ریل کی پٹڑی کے قریب سے کھڑا ملا تھا۔

ٹویٹر پر شیئر کی گئیں تصویروں میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ٹرالر کے ارد گرد پولیس اہلکار بڑی تعداد میں موجود ہیں جبکہ ایمبولینس بھی کھڑی ہیں۔

خیال رہے کہ میکسیکو کی سرحد سے امریکا میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے کی کوشش میں گزشتہ دہائیوں کے دوران ہزاروں افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور یہ واقعہ ان میں سے سب سے زیادہ ہلاکت خیز ہے۔

سان انتونیو کے علاقے میں سنہ 2017 میں 10 غیر قانونی تارکین وطن ایک ٹرک میں ہلاک ہوگئے تھے جبکہ سنہ 2003 میں پیش آنے والے ایک واقعے میں 19 غیر قانونی پناہ گزین حبس کے باعث ٹرک میں ہلاک ہوگئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں