The news is by your side.

Advertisement

بچوں کے لیے دنیا کا پہلا اسمارٹ فون تیار

بچوں کے لیے دنیا کا پہلا اسمارٹ فون تیار کرلیا گیا یہ اسمارٹ فون رکھنے والا بچہ ہر وقت والدین کی پہنچ میں رہے گا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بچوں کے لیے تیار کردہ اسمارٹ فون ’’نووس‘‘ ایک ہی وقت میں اسمارٹ فون، اسمارٹ واچ اور مصنوعی ذہانت والا اسپیکر بن جاتا ہے، یہ فورجی نیٹ ورک کو سپورٹ کرتا ہے جبکہ اس میں ویڈیو کال، آڈیو کال، اسمارٹ میسجنگ کی سہولت بھی موجود ہیں۔

بچوں کے لیے ڈیزائن کردہ اس فون میں والدین کی جانب سے لگائے جانے والے لاک اور پابندیوں کی سہولت موجود ہے اور اس فون کو تلاش کرنے کے لیے کئی آپشن دیے گئے ہیں۔

اس فون کو بچوں کے چھوٹے ہاتھوں کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے اور اس کی بیٹری روایتی فون کے مقابلے میں تین گنا زیادہ کام کرتی ہے۔

بچوں کیلئے دنیا کا پہلا اسمارٹ فون

کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ نووس بچوں کو ورزش کی ترغیب دیتا ہے اور کسی بھی مدد کی صورت میں وہ صرف ایک بٹن دبا کر والدین کو مدد کے لیے پکار سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ یہ فون گھریلو پوڈ میں لگا کر اے آئی اسپیکر اور گوگل اسسٹنٹ کا کام بھی کرتا ہے اس کا سب سے دلچسپ پہلو یہ ہے کہ فون کھول کر اس کی اسکرین نکال کر اور پٹہ باندھ کر اسے اسمارٹ واچ کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔

فون کا خاص نظام ہروقت بچے کی لوکیشن نوٹ کرتا رہتا ہے اور اگر بچہ کسی غیر آگاہ راستے پر چل پڑے تو اس کی اطلاع والدین کو بھی دیتا ہے تاہم اس کا اسکرین چھوٹا اور ٹچ کے قابل نہیں اگر بچہ واچ میں لگا بٹن تین مرتبہ دبا دے تو وہ مدد یعنی ایس او ایس کا پیغام بن کر والدین تک پہنچ جائے گا۔

کمپنی کی جانب سے نووس کی قیمت صرف 199 ڈالر رکھی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں