The news is by your side.

’جو لوگ رجیم چینج میں ملوث تھے وہ انکوائری نہیں چاہتے‘

اسلام آباد: پی ٹی آئی چیئرمین و سابق وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ جو لوگ رجیم چینج میں ملوث تھے وہ انکوائری نہیں چاہتے ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے مستقبل کے لیے رجیم چینج کی انکوائری بہت ضروری ہے امریکا کی ساری رجیم چینج دیکھ لیں انہیں کرپٹ لوگ سوٹ کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کیا ہمارے مفاد میں ہے کہ اس طرح کے چوراوپر بیٹھ جائیں اور سوا2 ماہ میں کونسی قیامت آگئی کہ پاکستان کی اکانومی نیچے چلی گئی یہ آج ہمیں بلیم کررہے ہیں کہ ہماری وجہ سے یہ سب کچھ ہوا ہے اگر ہمیں ذمہ دارٹھہرا رہے ہیں تو ہمیں ہٹایا کیوں ہمیں ذمہ داری لے لینے دیتے۔

عمران خان نے کہا کہ چوروں کے ٹولےکو مسلط کرنے کیلئے حکومت اداروں کوتباہ کرے گی اور جب ملک کے ادارے، رول آف لاتباہ کریں گے توملک کا مستقبل تباہ ہوگا اگر یہ کوئی اورچیز کرینگے توملک کو مزید دلدل میں پھنساتے جائیں گے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ کوئی سوچ نہیں سکتا کرپٹ لوگ اسمبلی میں بیٹھ کر1100ارب کے کیسزمعاف کرالیں انہوں نے نیب قوانین میں ترامیم کردیں نیب اب کچھ نہیں کرسکتا اور انہوں نے اپنی چوری کے تمام دروازے کھول دیئے،

انہوں نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف کل سپریم  کورٹ جارہے ہیں ڈھائی مہینے سے جس طرح پنجاب چل رہا ہےسب کے سامنے ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جو بھی یہ سسٹم مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے وہ اپنے آپ کو بدنام، پاکستان کو نقصان پہنچارہا ہے یہ لوگ صرف اپنی کرپشن بچانے آئے تھے ان کو پاکستان کی فکر ہی نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں