The news is by your side.

Advertisement

پشاور: 69 نان بائیوں کو جیل کی ہوا کھانی پڑ گئی

پشاور: خیبر پختون خوا کے دار الحکومت پشاور میں کم وزن روٹی فروخت کرنے والے نان بائیوں کے خلاف کریک ڈاؤن عروج پر ہے، پچاس سے زاید نان بائیوں کو جیل کی ہوا کھانی پڑ گئی۔

تفصیلات کے مطابق ڈپٹی کمشنر پشاور کے ترجمان نے کہا ہے کہ آج کم وزن کی روٹی فروخت کرنے والے 69 نان بائی گرفتار کر لیے گئے ہیں۔

ترجمان نے بتایا کہ گرفتار کیے جانے والے نان بائیوں کو 15 دن کے لیے جیل بھیج دیا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ڈی سی کے احکامات ہیں جو نان بائی 190 گرام سے کم روٹی فروخت کرے گا وہ جیل جائے گا۔

یاد رہے دو دن قبل پشاور میں ضلعی انتظامیہ نے کم وزن کی روٹی فروخت کرنے والے نان بائیوں کے خلاف کریک ڈاؤن میں مختلف علاقوں سے 22 نان بائی گرفتار کر لیے تھے۔

ترجمان ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پشاور میں 190 گرام روٹی کی قیمت 15 روپے مقرر کی گئی ہے، نان بائیوں کو اس کی تعمیل کرنی ہوگی ورنہ جیل کی ہوا کھانی پڑے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  تذکرہ پشاور کے قہوہ خانوں کا

واضح رہے کہ جمعے کے دن ضلعی انتظامیہ اور نانبائی ایسوسی ایشن میں کام یاب مذاکرات کے بعد پشاور شہر میں نان بائیوں نے ہڑتال ختم کر دی تھی اور تمام تندور کھل گئے تھے۔

اس موقع پر صدر نان بائی ایسوسی ایشن اقبال یوسف زئی نے کہا کہ تندوری پراٹھے کی قیمت 20 روپے مقرر کی گئی ہے، 190 گرام روٹی کی قیمت 15 روپے مقرر کرنے پر اتفاق ہوا ہے۔

دوسری طرف ضلعی انتظامیہ نے واضح طور پر کہہ دیا تھا کہ اب روٹی کا وزن کم کرنے والے نان بائیوں کے خلاف کارروائی ہوگی۔

پشاور کے نان بائیوں کا مطالبہ تھا کہ آٹے کی فی بوری 600 روپے اضافے کے ساتھ فروخت ہو رہی ہے جو انھیں بہت مہنگی پڑ رہی ہے جب کہ بجلی و گیس کی قیمتوں میں پہلے ہی ہوش ربا اضافہ ہو چکا ہے اس لیے حکومت روٹی کی نئی قیمت مقرر کرے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں