The news is by your side.

Advertisement

80 فیصد افراد نے اعتراف کیا کرونا سے متعلق فیصلے درست ہیں، اسدعمر

اسلام آباد : وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ٹیسٹ، ٹریک اینڈ قرنطینہ کی قومی حکمت عملی پر تمام صوبوں نے کام شروع کردیا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر میں اجلاس میں منعقد ہوا، اجلاس کے دوران اسد عمر کا کہنا تھا کہ گیلپ سروے میں 80 فیصد افراد نے اعتراف کیا کہ کرونا وائرس سے متعلق فیصلے درست تھے۔

اجلاس کے دوران دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ اجناس کی پیدوار،طلب، سرپلس تفصیلات آئندہ اجلاس میں پیش کی جائیں، سندھ میں یوٹیلٹی اسٹورز میں اشیا ضروریہ کی کمی کی شکایات مل رہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹرز، طبی عملے کیلئے حفاظتی سامان سے متعلق آگاہی، تربیت یقینی بنائی جائے، ٹیسٹ، ٹریک اینڈ قرنطینہ کی قومی حکمت عملی پر تمام صوبوں نے کام شروع کردیا۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ صوبہ سندھ کی جیل میں قیدیوں میں کرونا وائرس مثبت نہیں آیا، سندھ اس وقت 4 ہزار یومیہ کرونا ٹیسٹ کررہا ہے۔ ٹیسٹنگ کٹس کی تعداد مزید بڑھانے کی ضرورت ہے۔

پنجاب حکومت نے ٹی ٹی کیو پر کام شروع کردیا ہے۔ اسد عمر نے کہا کہ کرونا متاثرین کے نمبروں سے 11 ہزار روابط کی ٹریسنگ ہوچکی ہے، پنجاب کی جیلوں میں گنجائش سے زائد قیدی موجود ہیں، جیلوں میں قید 180افراد کے کرونا ٹیسٹ مثبت آئے جبکہ 15 ہزار قیدیوں، جیل کے عملے کے ٹیسٹ کیلئے نمونے حاصل کرلئے گئے۔

انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت نے ٹی ٹی کیو پر کام شروع کردیا ہے، کے پی کی جیلوں میں 28 فروری سے ہی ایس اوپیز پر عملدر آمد شروع کردیا، خیبرپختونخوا کی جیلوں میں قیدیوں میں کرونا پازیٹو نہیں آیا۔

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کہنا تھا کہ آزاد کشمیر حکومت نے جمعہ اور بدھ کو مکمل لاک ڈاؤن کا نوٹیفکیشن جاری کردیا، لاک ڈاؤن کے دوران صرف کھانے پینے کی دکانیں کھلی رہیں گی، صوبوں کو درپیش مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرائے جائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں