لاہور میں تیزاب گردی کے واقعات میں اضافہ
The news is by your side.

Advertisement

لاہور میں تیزاب گردی کے واقعات میں اضافہ

لاہور : پنجاب کے دارلحکومت لاہور میں تیزاب گردی کے واقعات میں اضافہ دیکھنے میں آیا، گجر پورہ میں نوجوان نے اہل خانہ پر تیزاب پھینک دیا جبکہ گزشتہ روز  بھی 5 خواتین سمیت 6 افراد پر تیزاب پھینکا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق تیزاب گردی کے پے در پے واقعات سے پنجاب میں خوف کی لہر دوڑ گئی، ٹوبہ ٹیک سنگھ کے علاقے گوجرہ میں تیزاب گردی کی لرزہ خیز واردات ہوئی، چک 92 ج ب میں نوجوان نے اہل خانہ پر تیزاب پھینک دیا، جس سے حاملہ خاتون جاں بحق، اور اسکاخاوند اور دو بچے زخمی ہو گئے۔

مقتولہ کے خاوند انور کی آنکھیں اور چہرہ شدید متاثر ہوا ،دو بچے آٹھ سالہ محسن اور سات سالہ عادل بھی تیزاب حملے میں زخمی ہوئے ہیں، واردات کے بعد ملزم صفدر موقع سے فرار ہو گیا۔

ملزم صفدر کو انور کی بیٹی کو ہراساں کرنے پر گاؤں بدر کیا گیا تھا، تیزاب حملے میں متاثرہ افراد کو الائیڈ ہسپتال جبکہ مقتولہ کی نعش ٹی ایچ کیو منتقل کر دی گئی۔ پولیس ملزم کی گرفتاری کے لئے چھاپے مار رہی ہے۔

ایک اور واقعہ میں لاہور کے علاقے گجر پورہ میں نوجوان نے 20 سالہ لڑکی پر تیزاب پھینک دیا، آمنہ گھر سے مارکیٹ جا رہی تھی کہ وسیم نامی نوجوان نے اس پر تیزاب پھینک دیا، جس سے اس کا چہرہ اور جسم جھلس گیا۔

پولیس تاحال ملزم کو گرفتار نہیں کر سکی۔

گذشتہ روز بھی لاہور میں تیزاب گردی کے واقعہ میں سفاک شوہر نے بیوی بیٹی، سالی اور ساس پر تیزاب پھینک دیا تھا۔

شفاقت ناراض بیوی کے گھر واپس نہ آنے پر سخت غصے میں تھا، بیوی نمرہ اور گھر والے چنگچی رکشے میں جا رہے تھے کہ شفاقت نے ان پر تیزاب پھینک کر زخمی کردیا، بیوی اور دو بچوں سمیت چھ افراد شفاقت کی تیزاب گردی کا نشانہ بنے۔

پولیس کا کہنا ہے شفاقت کی نمرہ سے تین سال قبل شادی ہوئی، جھگڑے کے بعد نمرہ نے طلاق مانگی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں