جیلر کے دفترمیں تصویر: وزیراعلیٰ کے حکم پر تحقیقاتی کمیٹی کا کام شروع -
The news is by your side.

Advertisement

جیلر کے دفترمیں تصویر: وزیراعلیٰ کے حکم پر تحقیقاتی کمیٹی کا کام شروع

راولپنڈی : اڈیالہ جیل سے نوازشریف اور حنیف عباسی کی سپرنٹنڈنٹ آفس میں لی جانے والی تصویر لیک ہونے کے معاملہ پر دو رکنی تحقیقاتی کمیٹی آج سے کام شروع کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف کی رہائی سے قبل جیل سپرٹنڈنٹ کے کمرے میں قیدی حنیف عباسی اور دیگر کی موجودگی میں لی جانے والی تصویر کی تحقیقات سے متعلق بنائی جانے والی کمیٹی نے کام شروع کردیا۔

کمیٹی میں ڈی آئی جی جیل خانہ جات ملتان ریجن اور آئی جی جوڈیشل شامل ہیں، کمیٹی آج اڈیالہ پہنچ کر معاملے کی تحقیقات کا آغاز کرے گی۔ موبائل کیمرے کے سپرنٹنڈنٹ آفس تک جانےکی انکوائری کی جائےگی۔

اس حوالے سے ذرائع آئی جی جیل آفس کا کہنا ہے کہ تحقیقاتی کمیٹی تین روز میں انکوائری مکمل کرکے رپورٹ پیش کرے گی، کمیٹی رپورٹ پر قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

مزید پڑھیں: جیلر کے کمرے میں حنیف عباسی کی موجودگی، وزیراعلیٰ کا نوٹس، تحقیقات کا حکم

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ یہ تصویر نوازشریف کی ضمانت کے بعد کی ہے اور جیل کے اندر کی نہیں، سپرنٹنڈنٹ حنیف عباسی یا کسی بھی قیدی کو اپنے دفتر بلاسکتا ہے، کسی بھی قیدی کی رہائی کی خوشی میں مٹھائی کا آنا معمول کی بات ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں