افد 2018: سعودی عرب کا ریاض ایکسپوسنٹرمیں عسکری قوت کا اظہار -
The news is by your side.

Advertisement

افد 2018: سعودی عرب کا ریاض ایکسپوسنٹرمیں عسکری قوت کا اظہار

ریاض : سعودی عرب میں مسلح افواج کی حربی قوت اور ملکی دفاعی انڈسٹری کی صلاحیتوں کا عملی مظاہرہ کرنے کے لیے افد( اے ایف ای ڈی) 2018 نامی دفاعی نمائش کا انعقاد کیا ہے جسے شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی سرپرستی حاصل ہے۔

تفصیلات کے مطابق ریاض انٹرنیشنل کنونشن سنٹر میں 25 فروری سے تین مارچ 2018 تک جاری رہنے والی اس نمائش کے انعقاد کا مقصد سعودی عرب کی مقامی دفاعی انڈسٹری کو فروغ دینا ہے اور یہ سعودی حکومت کے ویژن 2030 پروگرام کا حصہ ہے۔

سعودی وزیر دفاع میجر جنرل عطیہ المالکی نے اس حوالے سے مقامی میڈیا کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ اس نمائش میں تمام مقامی و بین الاقوامی شمولیت کنندگان کی صلاحیتوں کو بروئے کار لایا گیا ہے اور یہ سعودی وژن 2030 کے اہداف کو حاصل کرنے، مملکت کو مستحکم اورجنگ جوئی جیسی سرگرمیوں کو مرتکز کرنے کی طرف اہم پیش قدمی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس نمائش کے انعقاد سے جہاں سعودی عرب کی مقامی سامانِ حرب سازی کی فیکٹریوں کو ایک قدم آگے بڑھ کر اپنی صلاحیتیں منوانے کا موقع ملا ہے ‘ وہیں اس کے انعقاد سے مملکت کو بھی اسلحے کی مارکیٹ میں اپنے قدم جمانے کا موقع ملے گا۔اس نمائش سے ملکی فیکٹریوں کے لیے اقوامِ عالم میں نئے دروازے کھلیں گے۔

المالکی کا کہنا تھا کہ 2010 میں جب اس نمائش کا آغاز کیا گیا تھا‘ اس وقت تمام ملٹری پراڈکٹس باہر سے منگوائی جاتی تھیں اور ہم اس معاملے میں غیر ملکی کمپنیوں کے دست نگر تھے۔ ہمیں اپنی ملکی صلاحیتوں کو جانچنے اور انہیں موقع دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سنہ 2016 تک ہماری کمپنیز خو د کو ثابت کرچکی تھیں اور اب ہماری بیشتر ضروریا ت انہی پر منحصر ہیں۔ سنہ 2018 کی نمائش کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ یہ اب تک کی سب سے بڑی نمائش ہے۔

ایک ہفتے تک جاری رہنےوالی نمائش میں سعودی فضائیہ کی 11 ہزار مصنوعات شامل تھیں جسکا مقصد اندرون مملکت فضائی مصنوعات کو نمایاں کرنا ہے۔فضائی صنعت کے ڈائریکٹر کرنل عبداللہ الدریعی نے بتایا کہ دو برس کے دوران سعودی فضائیہ ایک لاکھ 20 ہزار سے زیادہ اشیاء سعودی عسکری فیکٹریوں میں تیار کرنے میں کامیاب ہوگئی ہے۔

نمائش میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بھی خصوصی طور پرشریک ہوں گے ‘ یاد رہے کہ سعودی عرب کا ویژن 2030 ولی عہد محمد بن سلطان ہی کی کاوشوں کا نتیجہ ہے جس کے تحت سعودی عرب میں انقلابی تبدیلیاں جاری ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں