تازہ ترین

پاکستان کو آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر قرض پروگرام کی توقع

وفاقی وزیر خزانہ محمد اورنگزیب نے کہا ہے کہ...

اسرائیل کا ایران پر فضائی حملہ

امریکی میڈیا کی جانب سے یہ دعویٰ سامنے آرہا...

روس نے فلسطین کو اقوام متحدہ کی مکمل رکنیت دینے کی حمایت کردی

اقوام متحدہ سلامتی کونسل کا غزہ کی صورتحال کے...

افغان حکومت کا انوکھا فیصلہ، لفظ ’’پارٹی‘‘ کا استعمال جرم قرار

افغانستان میں طالبان حکومت نے ایک انوکھا فیصلہ کیا ہے جس کے مطابق اب لفظ ’’پارٹی‘‘ کے استعمال کو جرم قرار دے دیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق افغانستان میں امریکا کے انخلا اور طالبان حکومت کے قیام کے بعد خواتین کی تعلیم، ملازمت، پارکوں میں آمد پر پابندی، ہیر اور بیوٹی سیلون دکانوں کی بندش کے بعد حال ہی میں سیاسی جماعتوں پر پابندی عائد کی گئی تھی اور اب نئے فیصلے نے دنیا کو حیران کر دیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق افغانستان کے قائم مقام وزیر انصاف عبدالحکیم شرعی نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ افغانستان میں سیاسی جماعتوں پر پابندی ہے اور پارٹی کا لفظ استعمال کرنا بھی طالبان قانون کے تحت جرم ہے۔

عبدالحکیم شرعی نے کہا کہ یہ لفظ وزارت انصاف کے تحت گزشتہ برس ہی غیر قانونی قرار پایا تھا، پارٹیوں کی اس نظام میں کوئی جگہ نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ قانونی اعتبار سے سیاسی جماعت یا حزب کا نام لینا ایک جرم ہے، جب فتح آئی تو جس کو نظام اچھا لگا تو رک گیا جسے پسند نہیں آیا وہ مختلف راستوں سے نکل گیا۔

Comments

- Advertisement -