The news is by your side.

Advertisement

افغانستان: واٹس ایپ پر پابندی کا فیصلہ صحافیوں کے احتجاج پرواپس

کابل : افغانستان حکومت نے واٹس ایپ اور دیگر ایپس پر پابندی کا فیصلہ صحافیوں اور صارفین کی جانب سے شدید احتجاج کے بعد واپس لے لیا، حکومتی فیصلے کیخلاف صحافیوں، میڈیا اور ایپ صارفین نے احتجاج کرتے ہوئے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق افغان حکومت کی جانب سے واٹس ایپ پر پابندی کا فیصلہ کیا گیا تاہم ابھی اس پر عمل درآمد بھی نہیں ہوا تھا کہ صحافیوں، میڈیا گروپوں اور دیگر صارفین کی جانب سے اس فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایاگیا۔

اس کے علاوہ افغانستان کے ایک سینیئر صحافی نے اس اقدام کو ترقی سے منہ موڑنا قرار دیتے ہوئے فیصلے کیخلاف بھرپور مزاحمت کا اعلان کیا تھا۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق حکومت نے یہ اقدام طالبان اور دیگر جنگجو گروپوں کی جانب سے ایسی ایپس کو استعمال کرنے کی اطلاعات کے بعد کیا تھا۔


مزید پڑھیں: افغان حکومت نے واٹس ایپ پر پابندی عائد کردی


ذرائع کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے افغان حکام نے موبائل کمپنیوں کو ایک لیٹر جاری کیا جس میں کہا گیا تھا کہ سکیورٹی خدشات کے پیش نظر ایسی ایپس کو عارضی پر بند کیا جائے۔

واضح رہے کہ واٹس ایپ، فیس بک میسنجر اور وائبر افغانی عوام بڑی تعداد میں استعمال کرتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں