The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں خود کش کار دھماکا: 14 فوجی ہلاک

کابل : افغانستان کے صوبے ننگر ہار میں فوجی اڈے پر کیے گئے خودکش کار بم حملے کے نتیجے میں14 افغان فوجی مارے گئے۔ ذرائع کے مطابق حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کرلی ہے۔

افغان میڈیا کے مطابق ننگرہار کے ضلع شیرزاد میں فوجی چیک پوسٹ پر تیز رفتار کار آکر ٹکرا گئی جس سے زوردار دھماکا ہوا اور چیک پوسٹ مکمل طور پر تباہ ہوگئی، حملہ آور دھماکا خیز مواد سے لدی ایک گاڑی پر سوار تھا۔

ننگر ہار کی صوبائی کونسل کے ڈپٹی ہیڈ عبید اللہ شنواری نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ خود کش کار بم دھماکے میں 14 اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ یہ اہلکار سول آرڈر فورس سے تعلق رکھتے تھے جو افغان آرمی کے ماتحت ہے۔

افغان ذرائع ابلاغ کے مطابق افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے اس خودکش حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ طالبان ترجمان نے دعویٰ کیا کہ اس کار بم دھماکے میں مجموعی طور پر50 افغان فوجی ہلاک و زخمی ہوئے۔

مقامی طالبان کمانڈر نے ننگرہار فوجی چیک پوسٹ پر حملے کے بعد مطالبہ کیا ہے کہ امریکی اور افغان فوج عام شہریوں پر بمباری کرنا بند کریں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز ترجمان طالبان نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ امریکا امن معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شہریوں پر بمباری کر رہا ہے جب کہ اس سے قبل پینٹاگون نے طالبان پر تشدد میں کمی نہ لا کر معاہدے کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا تھا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ افغانستان کے مشرقی صوبہ ننگر ہار ميں اسلامک اسٹيٹ اور افغان طالبان دونوں ہی متحرک ہيں اور اکثر اپنی کارروائیوں میں سکيورٹی فورسز اہلکاروں کو نشانہ بناتے رہتے ہيں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں