The news is by your side.

Advertisement

طالبان حکومت نے لڑکےاور لڑکیوں کی ایک ساتھ تعلیم پر پابندی لگادی

کابل: طالبان نے افغانستان میں مخلوط تعلیمی نظام پر پابندی عائد کردی ہے۔

کابل میں اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو میں افغان وزیرتعلیم عبدالباقی حقانی نے کہا کہ طالبان حکومت نے لڑکےاورلڑکیوں کی ایک ساتھ تعلیم پرپابندی لگادی ہے، افغانستان میں اسلامی نظام کےعلاوہ کوئی نظام نہیں چل سکتا۔

عبدالباقی حقانی نے کہا کہ مخلوط تعلیم کےخاتمےکےلیےمختلف جامعات سے بات ہوئی، کوئی ادارہ فوری الگ الگ عمارت تعمیر کرسکتاہےتوکرے،اگرمجبوری ہوتو درمیان میں پردے کا بندو بست کریں، یا پھر لڑکوں اورلڑکیوں کی تعلیم کےاوقات الگ الگ رکھے۔

افغان وزیر تعلیم کا مزید کہنا تھا کہ طالبان ایک جانب تو اسلامی، قومی اور ہماری تاریخی اقداروروایات کے مطابق ایک معقول اسلامی نصاب وضع کرنا چاہتے ہیں اوردوسری جانب ایسا نصاب بھی چاہتے ہیں کہ اس سے دوسرے ممالک کا مقابلہ کیا جاسکے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں