The news is by your side.

Advertisement

طویل عرصے تک لاپتا رہنے والی افریقی مونالیزا کی پینٹنگ 1.2 ملین پونڈز میں‌ فروخت

لندن: افریقی مونا لیزا کے نام سے معروف پینٹنگ 1.2 ملین پونڈز میں فروخت ہوگئی۔ پینٹنگ کئی برس سے غائب تھی.

تفصیلات کے مطابق لندن میں ہونے والی ایک نمایش میں یہ فن پارہ 1.2 ملین پونڈز (لگ بھگ پندرہ کروڑ روپے) میں فروخت ہوا۔ ابتدائی بولی تین لاکھ پونڈز تھی. تیس برس کی گم شدگی کے بعد پورٹریٹ شمالی لندن کے ایک فلیٹ سے ملا۔ یہ پورٹریٹ نائیجیرین شہزادی ایڈی ٹوٹو کا ہے۔

اسے نائیجیریا سے تعلق رکھنے والے معروف آرٹسٹ بن اینوننیو نے سن 1973 میں پینٹ کیا۔ یہ مصور کی اب تک فروخت ہونے والی مہنگی ترین پینٹنگ ہے، جس کی اہمیت کا اندازہ اسی بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ ناقدین اسے افریقی مونا لیزا کہہ کر پکارتے ہیں۔

یاد رہے کہ مونا لیزا ممتاز اطالوی فن کار لیونارڈو ڈونچی کا شہرہ آفاق فن پارہ ہے، جسے جدید تاریخ کی مقبول ترین پینٹنگ بھی تصور کیا جاتا ہے۔ اس وقت اس فن پارے کی لاگت 800 ملین ڈالر ہے۔ یہ پیرس کے لووغ میوزیم میں آویزاں ہے۔


مونا لیزا کا ثقافتی ارتقا


پہلے خیال کیا جارہا تھا کہ شہزادی کا یہ پورٹریٹ ضایع ہوگیا ہے، مگر پھر انکشاف ہوا کہ یہ لندن کے ایک فلیٹ میں گذشتہ 30 برس سے آویزاں ہے. گو فلیٹ کے مالک کو اندازہ تھا کہ یہ کس افریقی مصور کی پینٹنگ ہے، مگر اسے اِس کی اہمیت اور مالیت کی خبر نہیں تھی۔ اسے ایک ماہر مصوری گیلیز پیپیٹ نے دنیا کے سامنے پیش کیا۔


افغان مونا لیزا شربت گلہ کو افغانستان ڈی پورٹ کردیا گیا


واضح رہے کہ یہ پورٹریٹ نائیجیریا میں 1960 کی خانہ جنگی قومی اتحاد اور مفاہت کی علامت بن گیا تھا۔ عام خیال تھا کہ یہ خانہ جنگی میں ضایع ہوگیا ہے، مگر اب یہ معلوم ہوتا ہے کہ فن پاروں کے اسمگلروں کے ذریعہ یہ کسی زمانے میں لندن پہنچ گیا تھا اور پھر آنے والے تین عشروں کے لاپتا ہوگیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں