The news is by your side.

غزہ پر فضائی حملوں کا دوسرا روز، اسرائیل نے 24 فلسطینی شہید کر دیے

غزہ پر اسرائیل کے فضائی حملے دوسرے روز بھی جاری رہے، شہادتیں 24 ہو گئیں۔

تفصیلات کے مطابق نہتے فلسطینیوں پر صہیونی مظالم عروج پر پہنچ گئے، اسرائیل نے دوسرے روز بھی غزہ کی پٹی پر فضائی بم باری کا سلسلہ جاری رکھا، جس سے مجموعی طور پر اب تک 24 فلسطینی شہید ہو گئے ہیں، آج (اتوار کو) یہودی روزے کے دن کو فریقین میں تشدد مزید بھڑکنے کا خطرہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔

حماس کے مطابق اسرائیلی طیاروں نے جبالیہ مہاجر کیمپ کے قریب بچوں پر بم باری کی، فلسطینی وزارتِ صحت کے مطابق 2 روز کے دواران اسرائیلی بمباری سے 6 بچوں سمیت چوبیس افراد شہید اور 203 فلسطینی زخمی ہوئے ہیں۔

اسرائیل نے ایک ہفتے تک حملے کرنے کی دھمکی بھی دے دی ہے، اور دعویٰ کیا ہے کہ اسلامی جہاد کی جانب سے اسرائیل پر سینکڑوں راکٹ فائر کیے گئے۔

اسرائیل کی نہتے فلسطینیوں پر بمباری کے نتیجے میں درجنوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئیں، کئی مقامات سے دھوئیں کے بادل اٹھتے رہے۔

غزہ سٹی اسرائیل کے حملے میں سیکڑوں فلسطینیوں کے زخمی ہونے کے بعد ڈاکٹروں کو طبی سامان کی شدید قلت کا سامنا ہے، جمعے کو غزہ پر حملے کے بعد اسرائیلی فورسز نے شہر کو ہونے والی ایندھن کی ترسیل بھی روک دی، جس سے شہر کے واحد پاور پلانٹ سے دن بھر میں محض چند گھنٹوں کے لیے ہی بجلی فراہم ہو پا رہی ہے۔

دنیا میں ردِ عمل

اسرائیل کی غزہ پر وحشیانہ بمباری پر دنیا میں ہلچل پیدا ہو گئی ہے، ایرانی صدر ابراہیم رئیسی نے حملوں کی شدید مذمت کی ہے، جب کہ پاسدارانِ انقلاب کا کہنا ہے اسرائیل کو نہتے فلسطینیوں پر کیے گئے ان حملوں کی بھاری قیمت چکا نا پڑے گی۔

مصر نے صورت حال کو معمول پر لانے کے لیے ثالثی کی کوششیں شروع کر دیں، سعودی عرب نے بھی غزہ پر ا سرائیل کی فضائی حملوں کی شدید مذمت کی، پاکستان کی جانب سے بھی حملہ غیر قانونی اقدام کی مثال قرار دیا گیا ہے۔

روسی وزارتِ خارجہ کی ترجمان ماریہ زخاروا کا کہنا ہے کہ روس فلسطین اسرائیل تنازع کے علاقے میں نئے مسلح پُر تشدد واقعات پر تشویش میں مبتلا ہے، فریقین پائیدار جنگ بندی کی طرف واپس آئیں۔

واضح رہے اسرائیل اور حماس کے درمیان 2021 میں 11 روز جنگ ہو چکی ہے، جس میں 250 نہتے فلسطینی شہید کیے گئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں