site
stats
پاکستان

حدیبیہ کیس نہ کھولنے سے متعلق بہت حیرانی ہوئی، اعتزازاحسن

اسلام آباد : پیپلز پارٹی کے رہنما اور سینیٹ میں قائد حزب اختلاف اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ حدیبیہ کیس نہ کھولنے سے متعلق بہت حیرانی ہوئی، جہانگیر ترین کو گھر بھیجنے کا جواز نہیں بنتا تھا، نظرثانی کی اپیل کی گئی توعمران خان پھنس سکتےہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں میزبان کاشف عباسی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ حدیبیہ کیس نہ کھولنے سے متعلق عدالتی فیصلے پر بہت حیرانگی ہوئی جبکہ سپریم کورٹ نے خود نیب کو اپیل دائرکرنے کی ہدایت کی تھی، حدیبیہ بینچ کو پراسیکیوٹر نے پاناما کیس سے متعلق حوالہ دیا۔

بینچ نے کہا کہ آپ اس کیس کو دوبارہ ریفر نہیں کریں گے۔ ججز نے فیصلے میرٹ دیکھ کر کرنا ہوتے ہیں، نیب20بار بھی تفتیش کرنا چاہے تو اسےنہیں روکا جاسکتا۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ جہانگیر ترین کا کیس نواز شریف سے بہتر تھا، انہوں نے مکمل منی ٹریل پیش کی تھی جبکہ نوازشریف نے تو ایک کاغذ بھی پیش نہیں کیا، وہ سپریم کورٹ یا جےآئی ٹی میں ایک دستاویز پیش کردیتے۔

نواز شریف ایک اکاؤنٹ نہیں بتاسکے جہاں سے پیسے گئے، ان کے پاس بچت کاراستہ ہی نہیں تھا، میرا خیال ہے کہ جہانگیر ترین کو گھر بھیجنے کا جواز نہیں بنتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ ریویوپٹیشن میں جہانگیر ترین کے بچنےکے امکانات ہیں، نظرثانی اپیل کی گئی توعمران خان پھنس سکتےہیں، سپریم کورٹ نے فیصلےسیدھے سیدھے کئےہیں۔

ایک سوال کے جواب میں سینیٹر اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ نوازشریف اور مریم نواز پےدرپے عدالتوں پر تنقید کررہے ہیں وہ بند کمرے سے نکلناچاہتےہیں جبکہ مریم نواز دیوار توڑ کر راستہ بنانا چاہتی ہیں۔

مریم نواز کے گالم گلوچ بریگیڈ میں وکلا شامل نہیں ہوں گے، نوازشریف ہرسازش میں آگے آگے رہے، انہوں نے یوسف رضا گیلانی اور دیگر کیخلاف بھی سازش کی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top