The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں تمام اقلیتیں آج غیرمحفوظ ہیں، وزیرخارجہ

اقلیتوں میں سے کوئی آواز اٹھاتا ہے تو ان پر حملے کیے جاتے ہیں

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارت میں تمام اقلیتیں آج غیرمحفوظ ہیں، اقلیتوں میں سے کوئی آواز اٹھاتا ہے تو ان پر حملے کیے جاتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں کہا کہ بھارت میں شہریت بل کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہو رہے ہیں، بھارت میں مظاہروں کے دوران اب تک 6 اموات رپورٹ ہوئی۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ بھارت میں مظاہروں کے درمیان سیکڑوں زخمی ہوئے ہیں، بھارت میں لوگ مودی سرکار کے ایک متنازع قانون کے خلاف نکلے، بھارت میں پر امن احتجاج کرنے والوں پر تشدد کیا جا رہا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارتی ریاستوں نے متنازع قانون مسترد کر دیا ہے، مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ عوام کو سڑکوں پر نکلنے کا کہہ رہی ہیں، مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ نے متنازع شہرت قانون کو مسترد کیا، مغربی بنگال میں کرفیوکا سماں ہے، نیم فوجی دستے تعینات ہیں۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ یو این ہیومن رائٹس کمیشن بھی بھارتی شہریت قانون مسترد کرچکا، امریکا، برطانیہ سمیت کئی ممالک نے شہریوں کو بھارت جانے سے روکا۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش کے وزیرخارجہ نے دورہ بھارت منسوخ کر دیا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان دنیا کو مودی سرکارکےعزائم سے آگاہ کرتا آ رہا ہے، مودی سرکار اور آرایس ایس کی سوچ غالب آگئی ہے، گاندھی نہرو کا سیکولربھارت سمٹا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں دن رات کرفیو جاری ہے، کشمیری یرغمال ہیں، انسانی حقوق کے اداروں اور صحافیوں کو مقبوضہ کشمیر جانے نہیں دیا جاتا، 5 اگست کے بعد ہم نے اپنی تشویش سے دنیا کو آگاہ کیا تھا، 135 دن سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو جاری ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ جامعہ ملیہ پر پولیس نے حملہ کیا، بچی کی ٹانگیں توڑ دی گئیں، علی گڑھ یونیورسٹی کے پرامن احتجاج پرظلم وبربریت کی گئی، بھارت میں تمام اقلیتیں آج غیرمحفوظ ہیں، اقلیتوں میں سے کوئی آواز اٹھاتا ہے تو ان پر حملے کیے جاتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں