The news is by your side.

Advertisement

امریکا نے ایران کے آگے گھٹنے ٹیک دیے؟

واشنگٹن: امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے ایک بار پھر مطالبہ کیا ہے کہ ایران سمیت دیگر فریقین شام میں جنگ بندی سے متعلق معاہدے پر عمل کریں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکی وزیرخارجہ کا کہنا ہے کہ شمالی شام میں شامی حکومت، ایران، روس اور حزب اللہ مبینہ طور پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کررہے ہیں اور حملوں کا سلسلہ بھی تاحال جاری ہے۔

انہوں نے اپنے بیان میں معاہدے کی خلاف ورزی پر شدید مذمت کرتے ہوئے فریقین سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر جنگ بندی کریں اور کسی بھی قسم کے حملوں سے باز رہیں۔ خیال رہے کہ حال ہی میں نامعلوم فضائیہ کی جانب سے شہری علاقوں پر بمباری کی بھی اطلاعات سامنے آئی تھیں۔

خیال رہے کہ 23 جنوری کو شام میں حکومت کے خلاف لڑنے والے علیحدگی پسندوں نے ادلب صوبے کے دو اضلاع کا مکمل کنٹرول حاصل کر کے چالیس فوجیوں کو ہلاک کردیا تھا۔

شام پھر دھماکوں سے گونج اٹھا، چالیس فوجی ہلاک

فرانسیسی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شام کے شہر ادلب میں دہشت گردوں نے بھرپور طاقت کے ساتھ حملہ کر کے چالیس فوجیوں کو ہلاک کیا، جس کے بعد روسی وزاتِ دفاع نے ہلاکتوں کی تصدیق کی تھی۔

یاد رہے کہ شام کا علاقے ادلب کو دہشت گردوں کا مضبوط مرکز سمجھا جاتا ہے، اس علاقے میں حکومتی فوج اور اتحادی فورسز کی مدد سے آپریشن جاری ہے، جس کے دوران دہشت گردوں کی جانب سے شدید مزاحمت بھی کی جارہی ہے۔ رپورٹ کے مطابق ادلب کی کل آبادی 30 لاکھ کے قریب ہے، جس میں سے 76 فیصد خواتین اور بچوں پر مشتمل ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں