The news is by your side.

Advertisement

امریکہ : فوجی لڑاکا کتوں کیلئے حیران کن ٹیکنالوجی کا استعمال

لندن : امریکی فوج میں شامل لڑاکا کتوں کے لیے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جارہا ہے، اس سلسلے میں خصوصی چشمے تیار کیے گئے ہیں تاکہ فاصلے پر رہ کر بھی ہدایات دی جاسکیں۔

اس حوالے سے برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق امریکی فوج میں شامل لڑاکا کتوں کے لیے آگمینٹڈ ریئلٹی یعنی (حقیقت کو بڑھا کر دکھانے والے) چشمے تیار کیے جا رہے ہیں تاکہ انہیں خطرناک صورتِ حال میں فاصلے پر رہ کر ہدایات دی جاسکیں۔

یہ چشمے کمانڈ سائٹ نامی ایک فرم نے تیار کیے ہیں جس کا انتظام امریکی فوج کی ریسرچ لیبارٹری سنبھالتی ہے، فوجی کتے دھماکہ خیز مواد اور دیگر خطرات کا پتہ لگانے میں مدد کرتے ہیں، لیکن انھیں ہدایات کی ضرورت ہوتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق مذکورہ آگمینٹڈ ریئلٹی چشموں کو ایسے ڈیزائن کیا گیا ہے کہ کتوں سے کام لینے والے فوجی خطرے سے دور رہتے ہوئے ان کو آسانی سے گائیڈ کرسکیں۔

واضح رہے کہ موجودہ جنگی تعیناتیوں میں فوجی عام طور پر اپنے جانوروں کو ہینڈ سگنل (ہاتھ کے اشارے) یا لیزر پوائنٹر کے ذریعہ ہدایات دیتے ہیں جس کے لیے فوجی کو ان کتوں کے نزدیک رہنا پڑتا ہے۔

ان چشموں کے اندر کتے بصری اشارے دیکھ سکتے ہیں جنھیں سمجھنے کے لیے انھیں تربیت دی جا سکتی ہے اور جس سے انھیں کسی مخصوص مقام پر بھیجا جاسکتا ہے، اس دوران ہینڈلر ریموٹ ویڈیو فیڈ کے ذریعے دیکھ سکتا ہے کہ کتا کیا دیکھ رہا ہے۔

اس حوالے سے فوجی حکام کا کہنا ہے کہ اگر فوج میں پروٹو ٹائپ اے آر چشموں کو بڑے پیمانے پر استعمال کیا جائے تو کتوں سے کام لینے والے فوجیوں کو خطرہ مول لینے کی ضرورت نہیں ہو گی۔

آرمی ریسرچ لیبارٹری (اے آر ایل) کے ایک سینئر سائنس دان ڈاکٹر سٹیفن لی نے کہا آگمینٹڈ ریئلٹی کو کتوں کو کمانڈز اور اشارے فراہم کرنے کے لیے استعمال کیا جائے گا اور کتا اس کے ساتھ اس طرح انٹر ایکٹ نہیں کرے گا جس طرح انسان کرتے ہیں۔‘

Comments

یہ بھی پڑھیں