The news is by your side.

Advertisement

ملک بھر میں 3 روزہ انسداد پولیو مہم کا آغاز

پولیو کے خاتمے کے لیے آج سے ملک بھر میں سخت سیکیورٹی انتظامات میں 3 روزہ ویکسی نیشن مہم شروع ہوگئی ہے۔ ہزاروں ٹیمیں لاکھوں بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائیں گی۔

ملک کے مختلف شہروں میں 3 روزہ انسداد پولیو مہم کا آج سے آغاز ہوگیا ہے۔ سکھر میں 5 تعلقوں میں 5 سال سے کم عمر 3 لاکھ 8 ہزار بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔

بلوچستان کے 16 اضلاع میں مہم کے دوران 6 ہزار 540 ٹیموں کے ذریعہ 17 لاکھ سے زائد بچوں کو حفاظتی قطرے پلائے جائیں گے۔

خیبر پختونخوا کے تمام اضلاع میں 3 روزہ انسداد پولیو مہم کے دوران 17 ہزار 7 سو 66 ٹیموں کے ذریعے 56 لاکھ بچوں کو انسداد پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔

ضلع مالا کنڈ میں سخت سیکیورٹی انتظامات میں 1 لاکھ 3 ہزار بچوں کو حفاظتی قطرے پلائے جائیں گے۔ ضلع میں 28 میں سے 11 یونین کونسل کو حساس قرار دیا گیا ہے۔

عوامی پارکس، ریلوے اسٹیشنز، بس اور ویگن اسٹینڈز، ہوائی اڈوں اور ٹرانزٹ پوائنٹس پر بھی خصوصی کاؤنٹرز قائم کیے گئے ہیں تاکہ کوئی بچہ بھی پولیو قطروں سے محروم نہ رہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ 2 سال میں پاکستان نے انسداد پولیو کے لیے نہایت بہترین اور منظم اقدامات اٹھائے ہیں جن کے باعث ان 2 سالوں میں پولیو کیسز کی شرح میں خاصی کمی آئی ہے۔

سنہ 2014 میں پاکستان میں 306 کیسز منظر عام پر آئے تھے جبکہ 2016 میں یہ تعداد گھٹ کر صرف 20 تک آگئی۔

کچھ عرصہ قبل یونیسف نے بھی انسداد پولیو کے لیے پاکستان کی کوششوں کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے پولیو کے مرض کے خاتمے کے لیے بھرپور اور نہایت منظم اقدامات اٹھائے ہیں جن کو دیکھتے ہوئے امید ہے کہ بہت جلد پاکستان سے پولیو وائرس کا خاتمہ ہوجائے گا۔

یاد رہے کہ سنہ 2015 میں اقوام متحدہ کی جانب سے جاری کی جانے والی رپورٹس کے مطابق صرف پاکستان اور افغانستان دنیا کے دو ایسے ممالک تھے جہاں اکیسویں صدی میں بھی پولیو وائرس موجود تھا تاہم گزشتہ برس افریقی ملک نائجیریا میں بھی ایک سے 22 پولیو کیسز ریکارڈ کیے گئے جس کے بعد اب نائیجریا بھی پولیو زدہ ممالک کی فہرست میں شامل ہوگیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں