اتوار, مئی 19, 2024
اشتہار

اسرائیل کے پاس رفح میں شہریوں کے تحفظ کا کوئی ’قابل اعتبار منصوبہ‘ موجود نہیں: انٹونی بلنکن

اشتہار

حیرت انگیز

واشنگٹن: امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے اسرائیل کو ساڑھے 3 ہزار بمبوں کی فراہمی روکنے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل کے پاس رفح میں 14 لاکھ فلسطینیوں کے تحفظ کا کوئی ’قابل اعتبار منصوبہ‘ نہیں ہے۔

اے بی سی نیوز سے بات کرتے ہوئے انٹونی بلنکن نے کہا کہ اسرائیل کے پاس وسیع پیمانے پر حملے کے دوران رفح کے شہریوں کی حفاظت کے لیے کوئی قابل اعتبار منصوبہ موجود نہیں ہے، امریکی بموں کو جنوبی شہر رفح میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

انھوں نے کہا رفح پر استعمال ہونے کے خدشے کے پیش نظر اسرئیل کو بموں کی فراہمی روکی گئی ہے، امریکی صدر جو بائیڈن نے اسرائیل پر واضح کر دیا ہے کہ رفح پر بڑے حملے کی صورت میں امریکا اسرائیل کی کوئی مدد نہیں کرے گا، امریکا رفح پر بڑے فوجی آپریشن کے لیے سپورٹ اور سپلائی نہیں کرے گا۔

- Advertisement -

حملے کی تیاری، اسرائیلی فوج کا رفح سے شہریوں کو نکل جانے کا حکم

بلنکن نے کہا کہ اپنے دفاع میں اسرائیل کی مدد کرنے کے لیے صدر جو بائیڈن پرعزم ہیں، اور صرف 2 ہزار پاؤنڈ (900 کلو گرام) اور 500 پاؤنڈ (225 کلو گرام) بموں کی کھیپ ہے جو روکی گئی ہے۔ اگر اسرائیل اپنے کہے کے مطابق رفح پر بڑے پیمانے پر حملہ کرتا ہے تو اس صورت حال میں مزید تبدیلی آئے گی۔

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے کہا کہ ہمیں ان ہتھیاروں کے استعمال کے طریقے سے متعلق حقیقی خدشات ہیں، اسرائیل کو رفح میں شہریوں کے تحفظ کے لیے ایک واضح اور قابل اعتبار منصوبہ بنانا ہوگا، اور ابھی تک ایسا کوئی منصوبہ دکھائی نہیں دیا ہے۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں