The news is by your side.

Advertisement

ایپل کے ذریعے ڈیڑھ ارب ڈالرز کا فراڈ

امریکی ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے جعلسازی کے لیے کی جانے والی ڈیڑھ ارب ڈالر کی ٹرانزیکشنز کو بلاک کردیا، گزشتہ سال ایپل اسٹور پر 16 لاکھ مشتبہ ایپلی کیشنز کو بلاک کیا گیا تھا۔

بین الاقوامی ویب سائٹ کے مطابق امریکی ٹیکنالوجی جائنٹ ایپل نے اپنے ایپ اسٹور پر ایک سال میں جعلسازی کے لیے کی جانے والی ڈیڑھ ارب ڈالر کی ٹرانزیکشنز کو بلاک کردیا ہے۔

ایپل کی آفیشل ویب سائٹ پر جاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ سال ایپل اسٹور پر 16 لاکھ مشتبہ ایپلی کیشنز کو بلاک کیا گیا جبکہ ڈیڑھ ارب ڈالرکی مشتبہ ٹرانزیکشن کو روک کر ان کے خلاف کارروائی بھی کی گئی۔

2021 میں ایپل کی ایپس پر نظر ثانی کرنے والی ٹیم نے صارفین کی پرائیوسی کی خلاف ورزی پر 34 ہزار 500 ایپس کو مسترد کیا، جبکہ 1 لاکھ 57 ہزار ایپلی کیشنز کو کاپی کیٹ (کسی دوسری ایپ کی ہوبہو کاپی کرنا ) کرنے اور ان ایپ پرچیز میں صارفین کو گمراہ کرنے پر مسترد کیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ صرف سال 2021 میں ہی ایپل نے چوری شدہ کارڈ کی مدد سے کی جانے والی 33 لاکھ ٹرانزیکشنز کو بلاک کیا۔

رپورٹ کے مطابق ایپل نے صارفین کے تحفظ کے لیے اپنی سیکیورٹی پالیسی کو مزید سخت کردیا ہے، ایپل کے ایپ ریویو پراسیس میں مختلف اقدامات کیے جاتے ہیں جن میں ممکنہ طور پر کسی فراڈ سے تحفظ کے لیے مشین لرننگ بھی شامل ہے۔

ایپل ملٹی پلیئر ایپ ریویو پراسیس کسی بھی ایپ کی تفصیلات جمع کر کے اس سے صارفین کے لیے پیدا ہونے والے ممکنہ مسائل اور خلاف ورزیوں کا جائزہ لیتا ہے۔

اس طریقہ کار کے تحت ایپل اسٹو پر ہر ایپ اور اپڈیٹ کو کراس چیک کیا جاتا ہے کہ آیا وہ صارفین کی پرائیویسی، سیکیورٹی اور اسپیم کے حوالے سے ایپ اسٹور کی گائیڈ لائن پر کام کر رہی ہیں یا نہیں۔

گزشتہ سال بھی ایپل نے 8 لاکھ 35 ہزار ایپس اور 8 لاکھ 5 ہزار ایپس اپڈیٹ کو استعمال کنندگان کے لیے مسائل پیدا کرنے پر بین کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں