The news is by your side.

Advertisement

’یورپ کا قانون آئی فون صارفین کی پرائیوسی تباہ کررہا ہے‘

نیویارک: امریکا کی ٹیکنالوجی کمپنی ایپل کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ٹم کک نے یورپ کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا اعلان کردیا۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق پیرس میں منعقد ہونے والی ویوا ٹیک 2021 کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ٹم کک نے ڈیجیٹل مارکیٹنگ ایکٹ (ڈی ایم اے) کے حوالے سے خبردار کیا۔

انہوں نے کہا کہ’ اس ایکٹ کی وجہ سے آئی فون صارفین کی سیکیورٹی پرائیویسی تباہ کی جارہی ہے، جو کسی صورت قابل قبول نہیں ہے‘۔

ٹم کک کا کہنا تھا کہ ’یہ ایکٹ موبائل بنانے والی کمپنیوں کے لیے خطرناک ہے کیونکہ یہ ٹیکنالوجی قوانین کی خلاف ورزی ہے اور صارفین کے مفاد میں نہیں ہے، فون کے آپریٹنگ سسٹم کی زبان کو صارف کی دلچسپی کے مطابق ہی رکھا جاتا ہے‘۔

انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ کہ ڈی ایم اے کے ذریعے تمام بڑی ٹیکنالوجی کمپنیوں جیسے ایپل اور گوگل کے اختیارات کو ختم کر کے مارکیٹ میں اپنی اجارہ داری قائم کی جائے گی، جو موبائل صارفین اور ٹیکانولجی کمپنیوں کے لیے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

ٹم کک نے کہا کہ قانون کا اطلاق 2023 سے ہوگا اور کوئی بھی کمپنی موجودہ قوانین کی خلاف ورزی نہیں کررہی، جس کی وجہ سے اُسے عالمی محصول کا دس فیصد بطور جرمانہ ادا کرنا پڑے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں