The news is by your side.

Advertisement

سانحہ اے پی ایس کے متاثرہ طالب علم احمدنواز نے ڈیانا ایوارڈ حاصل کر لیا

احمد نواز یہ ایوارڈ حاصل کرنے والے پہلے پاکستانی ہیں

لندن : سانحہ اے پی ایس میں دہشت گردوں اور موت کو شکست دینے والے طالب علم احمد نواز کو لندن میں ڈیانا ایوارڈ سےنوازا گیا، احمد نواز کو نوجوانوں کی تعلیم کے حوالے سے ان کی خدمات پر یہ ایوارڈ دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی پارلیمنٹ میں لیڈی ڈیانا ایوارڈ دینے کی تقریب ہوئی ، تقریب میں آرمی پبلک اسکول پشاور کے غازی طالب علم احمد نواز کو نوجوانوں کی تعلیم کے حوالے سے ان کی خدمات پر ڈیانا ایوارڈ سے نوازا گیا۔

احمد نواز نے لیڈی ڈیانا ایوارڈ لینے والے پہلے پاکستانی کا اعزاز حاصل کرلیا ہے۔

اس سے قبل برطانوی وزیراعظم کی جانب سے احمد نواز کے لئے پوائنٹ آف لائٹ ایوارڈ کا اعلان کیا تھا ، برطانوی وزیراعظم کی جانب سے جاری کردہ خط میں انتہاپسندی کے خلاف احمد نواز کی خدمات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا تھا اس مہم میں احمدنواز نےگرانقدرکام کیا۔

مزید پڑھیں : سانحہ اے پی ایس کے زخمی طالب علم احمد نواز کیلئے پوائنٹ آف لائٹ ایوارڈ کا اعلان

احمد نواز برطانیہ کے انسداد دہشت گردی یونٹ کے 11 سے 16 سال کے نوجوانوں کو انتہا پسندی سے بچانے کی مہم ’ایکشن کاؤنٹر ٹیرر ازم‘ میں سرکاری طور پر ان کی مدد کر رہے ہیں جبکہ انھیں لندن کی ایڈوائزری بورڈ آف نیشنل ٹیررازم کونسل کا رکن بھی نامزد کیا گیا ہے۔

علاوہ ازیں احمد نواز کو برطانیہ اور یورپ کا ینگ پرسن آف دی ایئر، ایشیا انسپائریشن ایوارڈ اور درجنوں دیگر ایوارڈز سے نوازا جا چکا ہے۔

واضح رہے چار سال قبل 16 دسمبر 2014 کو پشاور آرمی پبلک اسکول میں خون کی ہولی کھیلی گئی تھی، دہشت گردوں نے علم کے پروانوں کے بے گناہ لہو سے وحشت و بربریت کی نئی تاریخ رقم کی تھی اور دردناک سانحے اور دہشت گردی کے سفاک حملے میں 147 افراد شہید ہوگئے تھے، جس میں 132 بچے بھی شامل تھے۔

سانحہ اے پی ایس پشاور میں زخمی ہونے والے طالب علم احمد نواز کو حکومت نے سرکاری خرچ پر 2015 میں علاج کے لیے برطانیہ بھیجا تھا، جہاں اُن کا علاج کوئین الزبتھ اسپتال میں ہوا، برطانوی ڈاکٹرز نے احمد نواز کا علاج کیا جس کے بعد وہ صحت مند زندگی کی طرف لوٹے اور پھر لندن میں ہی تعلیم کا آغاز کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں