site
stats
عالمی خبریں

آرمینیا میں اپوزیشن رہنما کو رہا کروانے کے لیے مسلح افراد کی کارروائی

یریوان : ترکی کے پڑوسی ملک آرمینیامیں بھی بغاوت کی کوشش کی گئی مسلح افراد نے پولیس ہیڈکوارٹر پر دھاوابول دیا آرمینیا کی سرحد ترکی کیساتھ لگتی ہے جہاں جمعہ کی رات کو فوج کے ایک دھڑے نے مسلح بغاوت کی کوشش کی تھی لیکن ناکام رہی۔

برطانوی اخبار دی مرر کے مطابق ترکی میں بغاوت کی کوشش تو عوام نے ناکام بنادی لیکن اس کا دیکھا دیکھی پڑوسی ملک میں بھی بغاوت کی ناکام کوشش اُس وقت کی گئی جب مسلح افراد نے پولیس ہیڈ کوارٹر پر دھاوا بول کر پولیس چیف سمیت کئی افراد کو یرغمال بنالیاگیا حملہ آوروں کا مطالبہ تھا کہ اپوزیشن رہنماءجریرسیفلیلیان کورہا کیا جائے۔

روسی میڈیا کے مطابق حملے میں ایک شخص جاں بحق اور کم ازکم دوزخمی ہوگئے ہیں جبکہ حملہ آوروں نے پولیس چیف سمیت کئی افراد کو یرغمال بنالیا، حملہ آور آرمینیا ئی رہنماءجریرسیفیلیان کوآزادکرنے کا مطالبہ کررہے ہیں کیونکہ ان کے حامیوں نے کہاتھاکہ آج وہ مسلح بغاوت چاہتے ہیں تاکہ آرمینیاءکی حالت بدلی جاسکے۔

ذرائع کے مطابق بغاوت کے خدشے کے پیش نظرسیکیورٹی فورسز کے دستے فوری طور پر موقع پر پہنچ گئے ہیں جبکہ ملکی سیکیورٹی فورسز ولادی میربھی موقع پر موجود ہیں ۔ حملہ اس وقت شروع ہوا جب مسلح افراد سے بھرا ایک ٹرک پولیس ہیڈکوارٹرمیں گھس آیا اور عمارت کا کنٹرول حاصل کرلیا۔امریکی نیشنل سیکیورٹی سروسز نے اپنے ایک بیان میں کہاکہ دویرغمالیوں کو آزاد کرالیاگیااور صورتحال پر کنٹرول کرنے کیلئے کوئی کسرنہیں چھوڑی جارہی۔

یادرہے کہ سیفلیان کو جون کے اواخر میں ایک عمارت اور ٹیلی کمیونیکیشن سائٹس پر قبضے کی سازش کے الزام میں گرفتار کیاگیا جبکہ گزشتہ سال اکتوبر میں اُنہوں نے ’نیا آرمینیا‘ کے نعرے کے ساتھ شروع ہونیوالی اپنی تحریک کے ذریعے اقتدار میں تبدیلی کا اعلان کیاتھااور یہ بھی کہاتھاکہ اس میں کامیابی صرف عوام کی مسلح بغاوت سے حاصل ہوسکتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top