The news is by your side.

Advertisement

بھارت : ارنب گوسوامی مزید مشکل میں، ملک بھر میں مظاہرے

بہار : بھارتی ٹی وی اینکر ارنب گوسوامی کے خلاف ملک بھر میں مظاہروں کا سلسلہ بڑھتا جارہا ہے۔ مظاہرین کی جانب سے ریپبلک ٹی وی لائسنس کو منسوخ کرنے اور ارنب کی گرفتاری کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

بھارتی ریاست بہار کے ضلع دربھنگہ میں سوشل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا نے ارنب گوسوامی کے لیک ہونے والے واٹس اپ چیٹ کے بعد ریپبلک ٹی وی کے لائسنس کو منسوخ کرنے اور ارنب کو یو پی اے کے تحت گرفتار کرنےکا مطالبہ کیا ہے۔

ایس ڈی پی آئی نے ان انکشافات پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ارنب گوسوامی کو گرفتار کرکے ان سے تفتیش کرنے اور مہاراشٹر حکومت کی جانب سے اعلیٰ سطح انکوائری کے مطالبے کے حوالے سے ملک بھر میں احتجاجی مظاہروں کا انعقاد کیا ہے۔

ایس ڈی پی آئی کے رہنماؤں نے سوال اٹھایا کہ قومی سلامتی سے متعلق معلومات کو ارنب گوسوامی تک کون پہنچا رہا تھا۔ اس کی معلومات کیلیے ارنب اور اس کے موبائل فون کو چیک کیا جائے۔

اس سے پوچھا جائے کہ وہ کیوں ہمارے40 فوجیوں کی لاشوں پر جشن منارہا تھا۔ارنب اپنے چینل کی ریٹنگ کیلئے قوم پرست ہونے کا دعویٰ کرتا ہے جبکہ اس نے بھارت پر ہونے والے ایک دہشت گرد حملے کا جشن منایا۔

مظاہرین نے کہا کہ ایک واٹس اپ چیٹ سے ارنب بے نقاب ہوا ہے۔ بی جے پی اور ارنب کی گٹھ جوڑ کو بے نقاب کرنے کی ضرورت ہے۔ بھارتی عوام جاننا چاہتی ہے کہ کیا اس کے فون کو ضبط کرکے تحقیقات کی جائے گی۔

ایس ڈی پی آئی رہنماؤں نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ نے حال ہی میں ارنب کی ضمانت کیلئے مداخلت کی تھی، اب ملک کو اس سے بچانے کیلئے سپریم کورٹ کو کارروائی کرنی ہوگی۔

اب بھارت جاننا چاہتا ہے کہ ملک کو کس سے زیادہ خطرہ ہے، اب کون غدار ہے کسان رہنما یا ارنب گوسوامی؟ اس لیے ہمارا مطالبہ ہے کہ ارنب کے فون کالز کی تحقیقات کی جانی چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں