The news is by your side.

Advertisement

جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل،سپریم کورٹ میں سماعت شروع

اسلام آباد: احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کے ویڈیو اسکینڈل سے متعلق درخواستوں کی سماعت شروع ہوگئی ہے، چیف جسٹس آف پاکستان آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ سماعت کررہا ہے.

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل کے ضمن میں دائر  کردہ تین درخواستوں کی سماعت چیف جسٹس آف  پاکستان آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں تین رکنی بنچ کرہا ہے۔ بنچ میں جسٹس عظمت سعید اور جسٹس عمر عطا بندیال شامل ہیں۔

جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل سے متعلق اشتیاق مرزا، سہیل اختر اورطارق اسد نے 3 مختلف درخواستیں دائرکر رکھی ہیں، درخواستوں میں شہبازشریف،مریم نواز،شاہدخاقان کوفریق بنایاگیاہے۔

دوسری جانب ان درخواستوں میںجج ارشد ملک، پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی اوروفاقی حکومت کو بھی فریق بنایا گیا ہے  ،درخواست گزاروں کی جانب سے عدالت سے معاملے کی تحقیقات کی استدعا کی گئی ہے۔

اس موقع پر سیکیورٹی کےسخت ترین انتظامات کیے  گئے ہیں. صرف مقدمے کے فریقین، وکلا اور صحافیوں کوسپریم کورٹ جانے کی اجازت ملی ہے،  جس کے لیےخصوصی پاس جاری کیے گئے ہیں.

واضح رہے کہ مریم نواز اپنی پریس کانفرنس میں احتساب عدالت کے جج کی خفیہ کیمرے سے بنی مبینہ ویڈیو سامنے لے آئی تھیں، جس سے یہ تاثر دیا گیا کہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے دباؤ کے تحت میاں نواز شریف کے خلاف فیصلہ دیا تھا۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹی فکیشن جاری

اسکینڈل سامنے آنے کے بعد جج ارشد ملک کو کام کرنے سے روک دیا گیا. بعد ازاں اس ضمن میں سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی، جسے چیف جسٹس نے سماعت کے لیے مقرر کیا.

خیال رہے کہ گزشتہ روز احتساب عدالت نمبر 2 کے جج ارشد ملک کو ہٹانے سے متعلق نوٹی فکیشن جاری کردیا گیا ہے، وزارت قانون نے نوٹی فکیشن جاری کیا، جس کی کاپی رجسٹرارآفس کومل گئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں