The news is by your side.

Advertisement

اسد شفیق کو جرمانہ کیوں ہوا؟

سندھ کے شہزر محمد کو پی سی بی کوڈ آف کنڈکٹ برائے پلئیرز اینڈ پلئیرز اسپورٹ پرسنل کی خلاف ورزی پر میچ فیس کا 75 فیصد جرمانہ عائد کیا گیا ہے ۔

انہوں نے کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی نیشنل اسٹیڈیم میں ناردرن کے خلاف کھیلے جانے والے میچ میں کی۔ یہ میچ ڈرا رہا تھا ۔

شہزر محمد نے کوڈ آف کنڈکٹ کے آرٹیکل 2.8 کی خلاف ورزی کی جس کے مطابق انہوں نے میچ کے دوران امپائر کے فیصلے پر اختلاف کیا تھا۔

واقعہ جمعرات کو ناردرن کی دوسری اننگز کے 74 ویں اوور میں پیش آیا جب شہزر محمد کی وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ کی اپیل کو مسترد کر دیا گیا تھا جس پر انہوں نے مایوسی کا اظہار کیا۔

یہ دو میچز میں دوسری مرتبہ آرٹیکل کی خلاف ورزی تھی، لیول ون میں دوسری مرتبہ خلاف ورزی پر کم از کم 70 فیصد جرمانے سے دو میچز کی معطلی تک کی سزا ہے۔

ایک الگ واقعہ میں سندھ کے کپتان اسد شفیق پر 20 فیصد میچ فیس کا جرمانہ کیا گیا ہے انہوں نے آرٹیکل 2.3کی خلاف ورزی کی جس کے مطابق انہوں نے نازیبا الفاظ استعمال کیے۔

Image

اسد شفیق نے ناردرن کی دوسری اننگز کے 52 ویں اوور کے اختتام پر مایوسی میں اشتعال دلانے والے جملے بولے۔
‏ لیول ون میں پہلی مرتبہ خلاف ورزی پر وارننگ یا میچ فیس کے 70 فیصد تک جرمانے کی سزا ہے۔

شہزر محمد اور اسد شفیق نےدن کے کھیل کے اختتام پر اپنے غلطی تسلیم کی اور میچ ریفری افتخار احمد کی جانب سے لگائی جانے والی پابندیوں کو تسلیم کیا۔ آن فیلڈ امپائرز احسن رضا اور شوزب رضا اور تھرڈ امپائر آصف یعقوب کی جانب سے چارجز لگائے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں