The news is by your side.

Advertisement

اسما نبیل کینسر سے کیسے لڑتی رہیں؟

معروف مصنفہ اسما نبیل کی 2 روز قبل کراچی میں وفات ہوئی جس پر شوبز کے کئی فنکاروں نے دکھ کا اظہار کیا، ان کا ایک پرانا انٹرویو سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہو رہا ہے جس میں وہ اپنی بیماری پر بات کرتی دکھائی دے رہی ہیں۔

بطور مصنفہ، پروڈیوسر، شاعرہ اور کریٹو کنسلٹنٹ اپنے فرائض سرانجام دینے والی اسما نبیل کو سنہ 2013 میں 34 سال کی عمر میں چھاتی کے کینسر کی تشخیص ہوئی تھی۔

ان کے ایک پرانے انٹرویو کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے جس میں انہوں نے بہت سی باتوں کا تذکرہ کیا تھا۔

اسما کا کہنا تھا کہ 7 سال قبل پہلی مرتبہ جب مجھے پتہ چلا کہ کینسر ہے تو لگا زندگی رک سی گئی ہے، ضروری نہیں زندگی میں کوئی بھی صدمہ فوری آئے اور ایک دم اثر کرے، بعض اوقات آہستہ آہستہ بھی کوئی چیز آپ پر اثر انداز ہوتی ہے اور میرے ساتھ یہ ہی ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ علاج کے دوران ایک وقت ایسا بھی آیا کہ کلمے پڑھ لیے تھے، لگ رہا تھا کہ اب میں مزید نہیں رہوں گی لیکن ہر صدمہ یا تو آپ کو کمزور کردیتا ہے یا بہت زیادہ مضبوط، میں شکرگزار ہوں کہ اس کے بعد میں کافی مضبوط ہو کر دوبارہ کھڑی ہوئی۔

اسما کا کہنا تھا کہ بیماری کے دوران لوگ آپ کو پیار دینے کی کوشش کررہے ہوتے ہیں لیکن دنیا کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ بیچارگی کی نظریں انسان کو کمزور بنا دیتی ہیں، وہ انجانے میں اس شخص کی ہمت توڑ رہے ہوتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ میں اتنی پڑھی لکھی تھی پھر بھی جب کینسر کی رپورٹ میرے ہاتھ میں آئی تو میں بالکل ایسے ہوگئی تھی جیسے کچھ سمجھ ہی نہیں آرہا ہو، ایسی بیماری کے دوران ذہنی اور جذباتی طور پر بریک ڈاؤن آتے ہیں جو مجھے بھی آئے، مجھے بیٹھے بیٹھے ٹھنڈے پسینے آنا شروع ہوجاتے ہیں۔

اسما نے تمام خواتین سے اپیل کی تھی کہ جو بھی میری جیسی خواتین اس مرض سے لڑ رہی ہیں وہ دیگر عورتوں کو آگاہی فراہم کرنے کا ذریعہ بنیں اور ان کی مدد کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں