عاصمہ رانی قتل کیس: مرکزی ملزم مجاہد آفریدی گرفتار: Asma Murder Case
The news is by your side.

Advertisement

عاصمہ رانی قتل کیس: مرکزی ملزم مجاہد آفریدی گرفتار

پشاور: ایبٹ آباد میڈیکل کالج کی طالبہ عاصمہ رانی کو فائرنگ کر کے قتل کرنے والے مرکزی ملزم مجاہد آفریدی کو انٹرپول کے ذریعے شارجہ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملزم مجاہد آفریدی قتل کے فوری بعد دبئی فرار ہو گیا تھا جس کے بعد خیبرپخونخواہ پولیس نے انٹرپول سے ملزم کی گرفتاری میں مدد کی اپیل کی تھی بعد ازاں مجاہد آفریدی کا نام انٹرپول کے انتہائی مطلوب افراد کی فہرست میں بھی شامل گیا تھا۔

گرفتاری سے متعلق آئی جی خیبر پختونخواہ صلاح الدین محسود نے کہا ہے کہ مرکزی ملزم مجاہد آفریدی کی گرفتاری کے لیے پولیس تین سے چار ہفتوں سے مسلسل انٹرپول سے رابطے میں تھی، ملزم کو پاکستان لانے میں تھوڑا وقت لگ سکتا ہے تاہم امارات اور پاکستان پولیس رابطے میں ہیں۔


عاصمہ رانی قتل کیس: ملزم مجاہد انٹرپول کی انتہائی مطلوب افراد کی فہرست میں شامل


یاد رہے کہ 29 جنوری کو کوہاٹ میں مجاہد آفریدی نے رشتے سے انکار پر میڈیکل کالج میں زیر تعلیم ایم بی بی ایس تھرڈ ایئر کی طالبہ عاصمہ رانی کو فائرنگ کر کے قتل کردیا تھا جس کے فوری بعد ملزم اسلام آباد کے بینظیر بھٹو انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے غیر ملکی پرواز کے ذریعے سعودی عرب فرار ہو گیا تھا۔

بعدازاں 30 جنوری کو چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کوہاٹ میں میڈیکل کی طالبہ عاصمہ رانی کے قتل کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی خیبرپختونخواہ صلاح الدین محسود سے 24 گھنٹوں میں رپورٹ طلب کی تھی۔


عاصمہ رانی قتل کیس، چیف جسٹس کا ملزم کی گرفتاری اور ریڈوارنٹ پر ایک ماہ تک نتیجہ دینے کا حکم


واضح رہے 2 فروری کو پولیس نے عاصمہ کے قتل کے مرکزی ملزم مجاہد آفریدی کے دوست اور معاون شاہ زیب کو بھی گرفتار کیا تھا جو عاصمہ کی جاسوسی میں ملوث ہے، قتل کے وقت بھی وہ ملزم مجاہد کے ساتھ ہی تھا اور اسی نے واردات کے بعد مجاہد کو فرارد ہونے میں مدد فراہم کی تھی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں