The news is by your side.

Advertisement

خلا سے ایک بڑا سیارچہ زمین کی بلند و بالا عمارتوں کی جانب بڑھ رہا ہے

نیویارک:ناسا نے خبردار کیا ہے کہ اگلے ماہ 14 ستمبر کو زمین کے قریب سے دنیا کی طویل ترین عمارتوں سے بھی بڑا سیارچہ گزرے گا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے ناسا کا کہنا ہےکہ اس سیارچے 2000 کیو ڈبلیو7 کا قطر 290میٹر اور 650 میٹر ہے یا پھر یہ 951 سے 2ہزار 132فٹ اونچا ہو گا۔

یاد رہے کہ دنیا کی سب سے بڑی عمارت برج خلیفہ 2ہزار 717فٹ لمبی جبکہ دنیا کی دوسری بلند ترین عمارت شنگھائی ٹاور کی اونچائی 2ہزار 73فٹ ہے۔

یہ سیارچہ 14ہزار 361میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کر رہا ہے اور یہ شام 7 بج کر 54منٹ پر زمین سے 33لاکھ 12ہزار 944 میل کے فاصلے سے گزرے گا۔

ماہرین کا ماننا ہے کہ اس سیارچے سے دنیا کو کوئی نقصان پہنچنے کا اندیشہ نہیں ہے تاہم ناسا مزید معلومات حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اس سے قبل جون میں بھی ایک سیارچہ ہوائی کے پاس سے گزرا تھا لیکن وہ اس کے مقابلے میں کئی گنا چھوٹا تھا۔

ناسا میں سیارچوں کی جانچ کرنے والا چھوٹے سیارچوں کے حوالے سے آدھے دن پہلے آگاہ کر دیتا ہے جبکہ بڑے سیارچوں کے حوالے سے کئی دن قبل پتہ چل جاتا ہے اور مذکورہ سیارچے کے حوالے سے بھی دنیا ماہرین جانچ کرنے میں مصروف ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں