site
stats
اہم ترین

افغانستان میں فوجی ہیڈکوارٹر پرحملہ‘140فوجی ہلاک

کابل: شمالی افغانستان میں طالبان کے افغان فوج کے بیس پر حملےمیں 140فوجی ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کےمطابق افغانستان کے شمالی صوبے بلخ میں افغان فوجی اڈے پرطالبان کی جانب سے کیے جانے والے حملے میں 140فوجی جان کی بازی ہارگئے۔

عسکری حکام کاکہناہےکہ حملے کے بعد کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والی لڑائی میں دس طالبان جنگجو بھی مارے گئے ہیں۔

افغان فوجی اڈے پر حملے میں ہونے والی ہلاکتوں کے حوالے سے کہا جارہاہے ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد اس سے زیادہ ہے جو ابھی بتائی جارہی ہے۔

افغان شہر مزار شریف کے ایک فوجی اڈے پر یہ حملےجمعے کےدن ہوا اور افغان فوج کا یہ ہیڈکوارٹر مسجد کےقریب واقع ہے۔

فوجی ترجمان کا کہنا ہے کہ طالبان جنگجو فوجی وردی پہن کر اڈے میں داخل ہوئے اور پھر انھوں نے حملہ کر دیا۔

افغان فوج کے ایک ترجمان نصرت اللہ جمشیدی کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے اڈے میں واقع مسجد اور کنٹین میں فوجیوں کو نشانہ بنایا۔

طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دعویٰ کیاہے کہ انہوں نےافغان فوج کو بھاری نقصان پہنچایا ہے۔


امریکا نے افغانستان پر دنیا کا سب سے بڑا بم گرادیا


یاد رہے کہ حال ہی میں افعانستان کی وزارت دفاع کا کہنا تھا کہ ننگرہار میں شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے ٹھکانے پر 9800 کلوگرام وزنی بم کے حملے میں کم از کم 36 جنگجو ہلاک ہوئے تھے۔

واضح رہےکہ جی بی یو 43/بی نامی اس بم کو ’بموں کی ماں‘ کہا جاتا ہےاور یہ تاریخ کا سب سے بڑا غیر جوہری بم ہےجو امریکہ نے کسی بھی کارروائی میں استعمال کیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top