The news is by your side.

آسٹریلیا پہنچنے والے دو مسافروں میں ‘اومیکرون’ کی تصدیق

میلبرن : جنوبی افریقہ سے آسٹریلیا پہنچنے والے دو مسافروں میں کرونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون کی تصدیق ہوگئی۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق کرونا وائرس کی نئی قسم ڈیلٹا ویرینٹ سے زیادہ خطرناک اور تیزی سے پھیلنے قسم ہے جس کے باعث دنیا بھر میں کرونا وائرس کی ایک اور لہر آنے کا خدشہ ہے۔

جنوبی افریقہ سے آسٹریلیا کی جانب سفر کرنے والے دو مسافروں میں اومیکرون قسم کی تصدیق ہوئی ہے۔

نیو ساؤتھ ویلز کے محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ دونوں مسافروں کا ریاستی دارالحکومت سڈنی پہنچنے پر کرونا ٹیسٹ کیا گیا جو مثبت آیا حالانکہ دونوں مسافر کی مکمل ویکسینیشن ہوچکی ہے۔

محکمہ صحت کے حکام نے کرونا سے متاثر ہونے والے دونوں مسافروں کو چودہ روز کےلیے قرنطینہ کردیا ہے۔

جہاز میں سوار جنوبی افریقہ سے آنے والے دیگر 12 مسافروں کو بھی قرنطینہ میں بھیج دیا گیا ہے جب کہ جہاز کے عملے سمیت 260 افراد نے بھی خود کو قرنطینہ کرلیا ہے۔

آسٹریلیا کے ہفتے کے روز 9 جنوبی افریقی ممالک پر ایک مرتبہ پھر پابندی عائد کردی ہے جہاں کرونا وائرس کی قسم اومیکرون بہت زیادہ پھیل چکی ہے، تاکہ آسٹریلیا میں دوبارہ وبا پھیلنے کو روکا جاسکے۔

جن جنوبی افریقی ممالک پر پابندی عائد کی گئی ہے ان میں جنوبی افریقہ، نمیبیا، زمبابوے، بوٹسوانا، لیسوٹھو، اسواتینی، دی سیچلیز، مالاوی اور موزمبیکیو شامل ہیں۔

نیوزی لینڈ حکام نے بھی اومیکرون قسم کے پھیلنے پر مذکورہ ممالک پر پابندی عائد کردی ہے صرف نیوزی لینڈ کے شہریوں کو آنے کی اجازت ہے تاہم انہیں 14 روز تک قرنطینہ میں رہنا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں