The news is by your side.

Advertisement

آسٹریلیا لے گا اب ڈرون سے منفرد کام

دنیا بھر میں ڈرون کو عموماً جاسوسی کیلیے استعمال کیا جاتا ہے لیکن آسٹریلیا نے ریموٹ کنٹرول ڈرون کو جنگلی حیات کی جاسوسی کیلیے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

آسٹریلوی کنزرویشن گروپ اور آسٹریلین وائلڈ لائف کنزروینسی (اے ڈبلیو سی) کی ایک ٹیم نے ریموٹ کنٹرول ڈرون سے ملک میں جنگلی حیات کی جاسوسی کا فیصلہ کیا ہے لیکن اس کا مقصد جنگلی حیات کی آبادی کا پتہ لگانا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق آسٹریلوی کنزرویشن گروپ اور آسٹریلین وائلڈ لائف کنزروینسی (اے ڈبلیو سی) کی ایک ٹیم نے اس سلسلے میں ریموٹ کنٹرول ڈرون کا استعمال شروع بھی کردیا ہے۔

جنگلی حیات کی نگرانی کے نئے پروگرام کی پیر کو جاری کردہ تفصیلات میں بتایا گیا ہے کہ کس طرح سے ڈرونز آسٹریلیا میں خطرے سے دوچار جنگلی حیات کی نگرانی کے طریقہ کار میں ایک نئی جہت کا اضافہ کر سکتے ہیں۔

اے ڈبلیو سی کے فیلڈ ایکولوجسٹ مہالیا بوتھ ریمرز نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ ان کی جانب سے کیے گئے ٹیسٹ ایک ایسے عمل کے تصور کا ثبوت فراہم کرتے ہیں جسے پورے آسٹریلیا میں حیاتیاتی تحفظ کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

بوتھ ریمرز نے بتایا کہ تھرمل ڈرون کا استعمال کرتے ہوئے درحقیقت جانور کا پتہ لگانے اور آبادی کا زیادہ درست تخمینہ لگانے کے امکانات زیادہ ہوجاتے ہیں

Comments

یہ بھی پڑھیں