عید پر ان مزیدار غذاؤں سے پرہیز صحت کے لیے بہتر -
The news is by your side.

Advertisement

عید پر ان مزیدار غذاؤں سے پرہیز صحت کے لیے بہتر

رمضان کا مبارک مہینہ اپنے اختتام پر ہے اور عید الفطر آیا ہی چاہتی ہے۔ پورے ماہ روزے رکھنے کے بعد عید پر مزے مزے کے پکوان بنائے جاتے ہیں اور اہل خانہ و عزیز و اقارب کی تواضع کی جاتی ہے۔

لیکن کیا آپ جانتے ہیں کچھ غذائیں ایسی ہیں جنہیں کھا کر آپ کی عید خراب ہوسکتی ہے اور آپ کو ڈاکٹر کے پاس جانا پڑ سکتا ہے، لہٰذا ایسی غذاؤں سے پرہیز کرنا ہی بہتر ہے۔

آئیں دیکھتے ہیں وہ کون سی غذائیں ہیں۔


تلا ہوا گوشت

عید کوئی بھی ہو گوشت کے بغیر ادھوری ہے۔ عید پر گوشت سے مختلف اقسام کی مزیدار ڈشز تیار کی جاتی ہیں جن میں سے ایک تلا ہوا گوشت بھی ہے۔

لیکن کیا آپ جانتے ہیں تلا ہوا گوشت صحت کے لیے نہایت مضر ہے۔

درست طریقے سے نہ پکانے پر اس میں جراثیم باقی رہ سکتے ہیں جو آپ کو خطرناک بیماریوں اور مختلف انفیکشنز میں مبتلا کرسکتے ہیں۔

اس کی جگہ آپ گوشت کو اچھی طرح پکا کر، گرل یا بیک کر کے کھا سکتے ہیں۔


کیک

عید پر عزیز و اقارب کے گھر جاتے ہوئے میٹھے کے طور پر لے جانے کے لیے کیک سے بہتر کوئی چیز نہیں۔ عید الفطر کو ویسے بھی میٹی عید کہا جاتا ہے چنانچہ ایسے موقع پر کریم کیکس کا استعمال بہت بڑھ جاتا ہے۔

تاہم اس میں موجود مٹھاس آپ کے وزن میں اضافہ کرسکتی ہے اور آپ کو شوگر میں بھی مبتلا کرسکتی ہے۔

اس میٹھی عید پر کیک کی جگہ سویاں اور شیر خرمہ کھا کر عید کی مٹھاس میں اور بھی اضافہ کریں۔


جنک فوڈ

جنک فوڈ کھانا ہماری عام عادت بن گیا ہے، لیکن چونکہ عید پر آپ کے گھر میں آپ کی پسندیدہ نہایت مزیدار ڈش تیار ہوگی تو عید پر جنک فوڈ کھانے کے بجائے گھر کا بنا ہوا صحت مند کھانا کھانے کو ترجیح دیں۔


سوڈا ڈرنکس

عید پر مرغن کھانوں کے ساتھ کولڈ ڈرنکس بھی ضروری سمجھی جاتی ہیں۔ یہ آپ کا کھانا ہضم تو کردیتی ہیں تاہم ان میں موجود مضر صحت اجزا آپ کے جسم کو خطرناک نقصانات پہنچا سکتے ہیں۔

دن کے آغاز پر ایک جگ لیموں کا شربت بنا کر رکھ لیجیئے، اور جب بھی کچھ پینے کی خواہش ہو تو اس شربت کو نوش کریں۔

لیموں کا شربت مرغن غذاؤں کو ہضم کرنے میں مدد دے گا اور آپ سینے کی جلن سے بھی محفوظ رہیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں