The news is by your side.

Advertisement

آزاد کشمیر: نئے وزیراعظم کے انتخاب کی تحریک کثرت رائے سے منظور

آزاد کشمیر اسمبلی میں نئے وزیراعظم کے انتخاب کی تحریک کثرت رائے سے منظور کرلی گئی، تحریک کی منظوری کے وقت اپوزیشن نے احتجاج کیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق آزاد کشمیر کے نئے وزیراعظم کے انتخاب کیلیے اسمبلی میں تحریک کثرت رائے سے منظور کرلی گئی، اس موقع پر اپوزیشن نے شدید احتجاج کیا۔

تحریک منظوری پر آزاد کشمیر میں اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ نئے وزیر اعظم کےانتخاب کی کارروائی آئین اور قانون کیخلاف ہے۔

اس موقع پر رکن قانون ساز اسمبلی شاہ غلام قادر کا کہنا تھا کہ آپ کیوں آئین کیخلاف اجلاس جاری رکھنا چاہتے ہیں، جہاں آئین خاموش ہو تو پھر روایات کا سہارا لیا جاتا ہے۔

شاہ غلام قادر نے کہا کہ عدم اعتماد کیلئے بلائے گئے اجلاس میں نئے قائد کے انتخاب کی کوئی روایت نہیں ہے اس لیے اس اجلاس کو ختم کرکے نیا اجلاس قائد ایوان کے انتخاب کیلیے بلایا جائے۔

اس موقع پر اسپیکر آزاد کشمیر اسمبلی انوار الحق نے کہا کہ آئین کی یہ پریکٹس ماضی میں پہلے بھی ہوچکی ہے اس لیے ووٹنگ کے ذریعے نئے قائد ایوان کو منتخب کرنے جارہے ہیں۔

علاوہ ازیں نئے وزیراعظم کیلیے پی ٹی آئی کے نامزد امیدوار سردار تنویر الیاس نے اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں جمہوری پارٹیاں اپنے اندر تبدیلیاں لاتی ہیں منتخب وزیراعظم کیخلاف تحریک عدم اعتماد اتنی بڑی بات نہیں

انہوں نے کہا کہ اسپیکر کے پاس اسمبلی کے معاملات کے اختیار ہیں جو بھی ہوگا آئین وقانون کے مطابق ہوگا۔

واضح رہے کہ آزاد کشمیر کے وزیراعظم سردار عبدالقیوم نیازی کے خلاف اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد جمع ہے جس پر ووٹنگ کیلیے آج اجلاس بلایا گیا تھا۔

مزید پڑھیں: وزیراعظم آزاد کشمیر کیخلاف تحریک عدم اعتماد جمع

سردار عبدالقیوم نیازی کیخلاف عدم اعتماد تین روز قبل جمع کرائی گئی تھی جس پر 25 اراکین کے دستخط تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں