The news is by your side.

Advertisement

کوئی کام خلاف قانون نہیں کیا، آئی جی اسلام آباد کا رویہ غیرذمہ دارانہ ہے، وفاقی وزیر اعظم سواتی

اسلام آباد: وفاقی وزیرسائنس و ٹیکنالوجی اعظم سواتی نے کہا ہے کہ میں نے کوئی کام خلاف قانون نہیں کیا، آئی جی اسلام آباد کا رویہ غیر ذمہ دارانہ ہے۔

ان خیالات کا اظہا رانہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام ’آف دی ریکارڈ‘ میں کیا، اعظم سواتی نے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ تجاوزات قائم کرنے والوں اور چوکیدار کے درمیان جھگڑا ہوا تھا، جھگڑے کے بعد دھمکی دی گئی بم لگا کر آپ کے خان کو اُڑائیں گے۔

اعظم سواتی نے کہا کہ آئی جی اسلام آباد کسی کو بھیج دیتے تو تین ملازم زخمی نہ ہوتے، میں ایک شہری کے طور پر انہیں فون کررہا تھا، انہوں نے 22 گھنٹے تک میرا فون نہیں سنا، تنگ آکر معاملہ وزیراعظم اور سیکریٹری داخلہ کے نوٹس میں لایا۔

قبل ازیں اعظم سواتی نے سپریم کورٹ میں پیش ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ میں پیش ہوکر اپنا موقف پیش کروں گا، امید ہے چیف جسٹس کو موقف سمجھانے میں کامیاب ہوجاؤں گا۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا عام شہری کی حیثیت سے تحفظ کا مطالبہ کرنا میرا حق نہیں؟ کوشش کے باوجود سیکریٹری داخلہ کا آئی جی اسلام آباد سے رابطہ نہیں ہوسکا۔

واضح رہے کہ وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اعظم سواتی کا فون اٹینڈ نہ کرنے پر آئی جی اسلام آباد جان محمد کو عہدے سے ہٹادیا گیا تھا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے ازخود نوٹس کیس کی سماعت کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کے زبانی حکم پر ہونے والا آئی جی اسلام آباد کا تبادلہ روک دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں