The news is by your side.

Advertisement

بحرینی عدالت نے بانوے افراد کی شہریت منسوخی کا فیصلہ کالعدم کردیا

منامہ :بحرین اپیل کورٹ نے بحرینی حزب اللہ کے نام سے مسلح گروپ تشکیل دینے کے الزام میں گرفتار 92 افراد کی شہریت منسوخ کرنے کا فیصلہ کالعدم کردیا، ماتحت عدالت نے گزشتہ برس ان کی شہریت منسوخ کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق بحرین کی ایک اعلیٰ اپیل عدالت نے 90 افراد کی شہریت منسوخ کرنے کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا ہے،قبل ازیں ایک ماتحت عدالت نے بحرینی حزب اللہ کے نام سے دہشت گرد گروپ تشکیل دینے کے الزام میں مذکورہ افراد کی شہریت منسوخ کردی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اس ماتحت عدالت نے اس کیس میں ماخوذ 69 مدعا علیہان کو عمر قید ، 39 کو 10 سال اور 23 کو سات سال ، ایک کو پانچ سال اور چھے کو تین ، تین سال قید کی سزا کا حکم دیا تھا جبکہ تیس افراد کو ان پر عائد الزامات سے بری کردیا گیا تھا۔

خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اس عدالت نے مجموعی طور پر 138 ملزموں کی قومیت ضبط کرنے کا فیصلہ سنا یا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ گذشتہ سال ستمبر میں بحرین کے پبلک پراسیکیوٹر کے دفتر نے کہا تھا کہ اس کو نظامت برائے تفتیش ِجرائم ( سی آئی ڈی) کی جانب سے ملک میں دہشت گردی کے ایک سیل کی تشکیل سے متعلق رپورٹ موصول ہوئی تھی۔

پبلک پراسیکیوٹر نے کہا تھا کہ یہ گروپ ایرانی نظام کے لیڈروں کے ایما پر تشکیل دیا گیا تھا اور انھوں ہی نے ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب کو مختلف دہشت گرد دھڑوں کے عناصر کو اکٹھا کرنے کا حکم دیا تھا تاکہ وہ بحرین میں دہشت گردی کے حملے کر سکیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں