The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان اسمبلی کا اجلاس کورم پورا نہ ہونے کے باوجود جاری رہا

کوئٹہ : بلوچستان اسمبلی میں کورم پورا نہ ہونے کے باوجود اجلاس ایک گھنٹے سے زائد چلتا رہا، واک آﺅٹ پر ہونے کے باوجود اپوزیشن رکن نے چیمبر سے آکر کورم کی نشاندہی کی تو اجلاس ملتوی کردیا گیا۔

ایوان میں تعلیم جیسے اہم موضوع پر بحث ہورہی تھی، بلوچستان اسمبلی کا اجلاس جوں ہی شروع ہوا تو صوبائی وزیر تعلیم عبدالرحیم زیارتوال کی جانب سے گزشتہ اجلاس میں لفافے لینے کے الزام پر صحافی بائیکاٹ کرگئے۔

بعد ازاں حکومتی ارکان اور صوبائی وزیر تعلیم صحافیوں کو منانے آئے، عبدالرحیم زیارتوال نے وضاحت کی کہ میڈیا میں کوریج نہ ملنے کا گلہ کیا تھا دل آزاری پر معذرت خواہ ہوں، جس پر بائیکاٹ ختم کردیا گیا، صحافی واپس لوٹے تو اپوزیشن ارکان ، وزراء کے استعفوں کے معاملے پر واک آﺅٹ کرگئے تھے۔

ایوان نے این ایف سی ایوارڈ سے قبل وفاق سے ترقیاتی فنڈز کے اجراءسے متعلق قرارداد منظورکی جس کے بعد تعلیم کی بہتری سے متعلق تحریک کا آغاز ہوا۔

ارکان کی لمبی تقریروں کے دوران کورم پر کسی نے دھیان نہ دیا، تقریباً ایک گھنٹے سے زائد تک صرف 7سے 8ارکان ہی ایوان میں موجود تھے کہ اچانک اپوزیشن رکن نے اپنے چیمبر سے آکر کورم کی نشاندہی کی۔

اسپیکر اسمبلی یہ بات سن کر چونک گئے ، جس کے بعد ہال میں گھنٹیاں بھی بجائی گئیں مگر پھر بھی کورم پورا نہ ہوسکا۔

تعلیم کی بہتری سے متعلق تحریک پر صوبائی وزیر عبدالرحیم زیارتوال بحث سمیٹ نہ سکے تو اسپیکر نے بحث آئندہ اجلاس میں جاری رکھنے کی رولنگ دیتے ہوئے ایوان کی کارروائی 20مئی جمعہ کی شام چاربجے تک کیلئے ملتوی کردی، مختلف یونیورسٹیز کے ڈیڑھ سو طلباءوطالبات نے بھی ایوان کی کارروائی دیکھی۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں