The news is by your side.

Advertisement

حکومت بلوچستان اور اپوزیشن میں معاملات طے پاگئے

کوئٹہ: بلوچستان اور اپوزیشن میں معاملات طے پاگئے، اپوزیشن ارکان نے دو ہفتے سے جاری دھرنا ختم کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کی ایف آئی آر واپس لئے جانے پر اپوزیشن اراکین تیرہ دن بعد تھانہ بجلی گھر چھوڑ کر ایم پی اے ہاسٹل لوٹ گئے، اپوزیشن اراکین آج صبح تھانے سے ریلی کی صورت میں ایم پی اے ہاسٹل روانہ ہوئے۔

ریلی میں اپوزیشن جماعتوں جمعیت علمائے اسلام، بی این پی مینگل کے کارکنوں کی بڑی تعداد شریک ہوئی، ریلی اپوزیشن اراکین کو لیکر بجلی گھر تھانے سے براستہ زرغون روڈ ایم پی اے ہاسٹل پہنچ کر ختم ہوئی۔

اس موقع پر اپوزیشن رہنماوں کا کہنا تھا کہ ایف آئی آر کی واپسی حکومت کی شکست ہے ،کھیل اب شروع ہوا حکومت کو ٹف ٹائم دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: کوئٹہ: اپوزیشن کا اسمبلی کے باہر دھرنا، اہلکاروں اور ارکان میں دھکم پیل

دوسری جانب جام حکومت کیخلاف لائحہ عمل کے لئے اپوزیشن جماعتوں نے کل اجلاس طلب کرلیا ہے، اجلاس میں جےیو آئی (ف) ،بی این پی مینگل،پشتونخوامیپ اور آزاد رکن شریک ہونگے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں حکومت کیخلاف اسمبلی کےاندر اور باہر احتجاج سمیت دیگر آپشنز پر غور ہوگا۔

یاد رہے کہ بلوچستان اسمبلی میں اٹھارہ جون کو ہونے والے ہنگامہ آرائی کا مقدمہ اپوزیشن کے 17 اراکین اسمبلی سمیت دو سو سے زائد افراد کیخلاف درج کیا گیا تھا جس پر اپوزیشن لیڈر سمیت دیگر اراکین اسمبلی گزشتہ تیرہ روز سے تھانے میں گرفتاری دینے کیلئے بیٹھے ہوئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں