The news is by your side.

Advertisement

امریکہ ہنگامہ آرائی : براک اوباما نے ٹرمپ پر بڑا الزام عائد کردیا

واشنگٹن : امریکہ کے سابق صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ تاریخ امریکی کانگریس میں پیش آنے والے تشدد کے واقعات کو ہمیشہ یاد رکھے گی، جس کو موجودہ صدر ٹرمپ نے بھڑکایا۔

انہوں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے قانونی کے مطابق ہون والے انتخابات کے نتائج کے بارے میں بے بنیاد جھوٹ بولے جو ہماری قوم کے لئے ایک بہت بڑی بے عزتی اور شرمناک لمحہ ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی کانگریس میں گزشتہ روز ہونے والی ہنگامہ آرائی پر امریکہ کے سابق صدر براک اوبامہ نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے اس عمل کو امریکہ کی بہت بڑی بے عزتی اور شرمناک قرار دیا۔

امریکہ کے سابق صدر کا یہ بیان گزشتہ روز ٹرمپ کے ہزاروں حامیوں کی جانب سے امریکی کانگریس پر دھاوا بولنے کے چند گھنٹوں بعد سامنے آیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹرمپ کے حامیوں نے کانگریس کے مشترکہ اجلاس میں رکاوٹ ڈالی، جہاں قانون سازوں کو صدر منتخب ہونے والے جو بائیڈن کی جیت کی توثیق کرنے کے لئے ترتیب دیا گیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ تاریخ امریکی کانگریس میں پیش آنے والے پرتشدد واقعات کو یاد رکھے گی جس کو موجودہ صدر نے بھڑکایا، جس نے قانونی کے مطابق ہوئے انتخابات کے نتائج کے بارے میں بے بنیاد جھوٹ بولے اور یہ ہماری قوم کے لئے ایک بہت بڑی بے عزتی اور شرمناک لمحہ ہے۔

واضح رہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حامی کیپیٹل ہل (پارلیمنٹ بلڈنگ) کی عمارت میں داخل ہو گئے تھے جس کے بعد ٹرمپ کے حامیوں اور پولیس کے مابین جھڑپیں بھی ہوئیں، جھڑپوں کے بعد کیپیٹل بلڈنگ کو لاک ڈاؤن کر دیا گیا۔

اس پرتشدد جھڑپ میں اب تک چار افراد کی ہلاکت کی اطلاع ہے جبکہ21جنوری کی سہ پہر تین بجے تک کرفیو کی مدت میں توسیع بھی کردی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں