spot_img

تازہ ترین

سنی اتحاد کونسل نے مخصوص نشستوں کیلیے درخواست جمع کرا دی

سنی اتحاد کونسل نے خواتین اور اقلیتوں کی مخصوص...

پی ٹی آئی کا 3 مارچ کو انٹرا پارٹی الیکشن کرانے کا اعلان

پاکستان تحریک انصاف نے 3 مارچ کو انٹرا پارٹی...

وفاق کے بعد بلوچستان میں بھی حکومت سازی کے معاملات طے پاگئے

اسلام آباد : وفاق کے بعد بلوچستان میں بھی...

شادی کی تقریب سے واپسی پر وین کو حادثہ، 6 افراد جاں بحق

پنجاب کی تحصیل دنیا پور میں شادی کی تقریب...

اے آر وائی نیوز کا لائسنس معطل : ‘عدالت پہلی سماعت میں ہی پیمرا کا اقدام کالعدم قرار دے سکتی ہے’

اسلام آباد : ماہر قانون بیرسٹر احمدپنسوٹا کا کہنا ہے کہ طریقہ کار سے ہٹ کر اے آر وائی نیوز کی لائسنس معطلی غیرقانونی عمل ہے ، عدالت پہلی سماعت میں ہی پیمرا کا اقدام کالعدم قرار دے سکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیمرا آرڈر کے بعد ملک بھرمیں اےآروائی نیوزکی نشریات بند کردی گئیں۔

اس حوالے سے ماہر قانون بیرسٹر احمدپنسوتا نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پیمرا کا فورم پورا نہیں پھر بھی لائسنس معطل کردیا گیا، نیوز چینل کیلئے پہلے نوٹس کا اجرا پیمرا کیلئے لازمی ہے، طریقہ کار سے ہٹ کر لائسنس معطلی بندش غیر قانونی عمل ہے۔

احمد پنسوٹا کا کہنا تھا کہ اے آر وائی نیوز کے لائسنس معطلی کو میں پیمرا کی آمریت قرار دوں گا، پیمرا ہدایت پر عمل کیلئے ایک گھنٹے کا وقت کافی نہیں سمجھا جاتا۔

ماہر قانون نے کہا کہ پیمرا کے اس اقدام کی کوئی قانونی حیثیت نہیں، پیمراپرلازم ہے، نوٹس پرپہلے نیوز چینلز کا جواب سنے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ عدالت پہلی سماعت میں ہی پیمرا کا اقدام کالعدم قراردےسکتی ہے، پیمرا کو عدالتی حکم پرلائسنس معطلی کا فیصلہ واپس لینا پڑے گا۔

Comments

- Advertisement -