ہریانہ : بقر عید پر گائے کی قربانی پر پابندی -
The news is by your side.

Advertisement

ہریانہ : بقر عید پر گائے کی قربانی پر پابندی

ہریانہ : نام نہاد سیکولر بھارت کا اصل چہرہ دنیا کے سامنے آگیا، ہریانہ میں بقر عید پر گائے کی قربانی پر پابندی لگا دی گئی، گائے کے گوشت کے شبے میں بریانی کی دکانوں پر چھاپے مارے جارہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ریاست ہریانہ کے مسلمان اکثریتی علاقے میوات میں انتہاپسندو ہندو آپے سے باہر ہوگئے، پنچائیت کا اعلان کیا ہے کہ بقرعید پر گائے کی قربانی نہیں ہونے دیں گے۔

گائے کے گوشت پر پابندی لگا کر بریانی کی دکانوں پرچھاپے مارے جارہے ہیں اور دکانداروں کو سخت کارروائی کی دھمکی دیدی گئی ہے۔

یاد رہے ہریانہ کے وزیراعلیٰ نےانتہاپسندی کا زہراگلتے ہوئے مسلمانوں کو دھمکی دی تھی کہ اگروہ ہندوستان میں رہنا چاہتے ہیں تو گائے کا گوشت کھانا چھوڑ دیں ۔


مزید پڑھیں : مسلمان بھارت میں رہنے کیلئے گائے کا گوشت چھوڑدیں ،وزیراعلی ہریانہ


یاد رہے کہ ہریانہ میں گائے ذبح کرنے پر تین سے دس برس تک قید کی سزا کا قانون ہے۔ اس پر ایک لاکھ روپے کے جرمانے کی تجویز ہے۔ گائے کے گوشت رکھنے اور کھانے پر تین سال سے لے کر سات سال تک کی سزا ہوسکتی ہے

بھارت میں یہ پہلا واقعہ نہیں ہیں، رواں سال جولائی میں  ریاست مدھیہ پردیش میں گائے کا گوشت لے جانے کے شبے میں دو مسلمان خواتین کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا ڈالا جبکہ پولیس خاموش تماشائی بنی دیکھتی رہی تھی۔


 مزید پڑھیں : مدھیہ پردیش میں ہندو انتہا پسندوں کا 2مسلمان خواتین پر بدترین تشدد


گزشتہ سال بھارتی ریاست اتر پردیش میں رہنے والے 50 سالہ مسلمان اخلاق کو مشتعل ہجوم نے ڈنڈے اور پتھرمارمار کر محض اس لئے ہلاک کردیا کہ اس پر گائے کا گوشت کھانے کا شبہ تھا۔


مزید پڑھیں : بھارت میں گائے کا گوشت کھانے کے شبہ میں مسلمان قتل


واضح رہے کہ ذوالحج کی 10 تاریخ کو قربانی کرنا مسلمانوں کے لئے ایک اہم فریضہ اور ان کا سالانہ تہوار ہے۔ جسے وہ ہرسال عقیدت کے طور پر باقاعدگی سے مناتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں