The news is by your side.

Advertisement

اپنے مجسمے کو جسم کے بال ناخن اور بال دینے والا شخص

ٹوکیو : جاپان میں اپنی بیوی سے بے پناہ محبت کرنے والے ایک بیمار شخص نے اپنا حقیقت سے قریب تر مجسمہ بنا ڈالا لیکن مجسمہ کی تیاری کے بعد اس پر جو انکشاف ہوا اس نے سننے والوں کو حیرت زدہ کردیا۔

جاپانی میڈیا رپورٹ کے مطابق انا نوما مساکی چی نامی ایک شہری گزشتہ کئی ماہ سے ٹی بی کے مرض کا شکار تھا، تمام تر تدابیر اور علاج کرانے کے باوجود اس کی بہتری کے امکانات نظر نہیں آرہے تھے۔

تھک ہار کر آخر میں ڈاکٹروں نے اسے لاعلاج قرار دے دیا اور اسے بتایا کہ وہ سال یا ڈیڑھ سال کا مہمان ہے جسے سن کو وہ بہت دلبرداشتہ ہوا اور اپنی چہیتی بیوی کیلیے فکرمند ہوگیا۔

انا نوما مساکی چی جو خودبھی لکڑی کے کام کا ایک ماہر کاریگر تھا اس نے اپنی موت کے بعد بیوی کا غم بانٹنے کیلئے لکڑی کے دو ہزار ٹکڑے ملا کر ایک مجسمہ بنایا جس کی خاص بات یہ تھی کہ اس مجسمے میں اس نے اپنے جسم کے بال ناخن حتیٰ کے پورے دانت بھی اس مجسمے میں لگا دیئے۔

لیکن مجسمہ کی تیاری کے بعد بھی اس کے  پاس زندگی کے چند ماہ باقی تھے، اس پر یہ قیامت  ٹوٹ پڑی کے اس کی بیوی نے اس سے طلاق لے کر کسی اور سے شادی کرلی۔

یہی نہیں اس مسجمے میں جسم کے بال ناخن اور دانت لگانے کے بعد وہ خود ایک چلتی پھرتی لاش بن گیا تھا ایک روز معمول کے چیک اپ کے بعدڈاکٹروں نے اسے بتایا کہ اب وہ ٹی بی کا مریض نہیں رہا بلکہ چند ماہ میں وہ مکمل صحت یاب بھی ہوجائے گا۔

انا نوما مساکی چی کا مجسمہ آج بھی ایمسٹریڈم کے عجائب خانے میں موجود ہے۔ جسے محبت کی علامت کے نام سے جانا جاتا ہے بلکہ اسے ناکام محبت کی علامت کہا جائے تو غلط نہ ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں