The news is by your side.

Advertisement

ایمازون کے بانی نے استعفیٰ دے دیا، وجہ سامنے آ گئی

واشنگٹن: دنیا کی مشہور ترین ای کامرس کمپنی ایمازون کے بانی اور سی ای او جیف بیزوس سے استعفیٰ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق جیف بیزوس نے پیر کو ایمازون سے باس کی حیثیت سے استعفیٰ دے دیا ہے، 27 سال قبل جولائی 1994 میں انھوں نے اس کمپنی کی بنیاد رکھی تھی۔

دنیا کی سب سے بڑی آن لائن کاروباری کمپنی ایمازون آج ایک ملٹی بلین ڈالر کمپنی ہے، بیزوس نے اپنے کیرئیر میں ایمازون کو بہت فائدہ دیا، انھوں نے ہمیشہ مستقبل کو دیکھتے کاروبار کیا جس کی وجہ سے کمپنی دنیا کی بہترین کمپنیز میں سے ایک ہے۔

ایمازون پر ای کامرس کو متعارف کروانے میں بھی 57 سالہ بیزوس کا بہت بڑا کردار رہا ہے، اگرچہ اس کمپنی نے انیس سو چورانوے میں ایک آن لائن کتاب فروخت کرنے سے آغاز کیا تھا تاہم آج یہ ایک بہت بڑی ای کامرس کمپنی ہے، جس کی مالیت 1.7 ٹریلین ڈالر ہے۔

اس کمپنی نے جیف بیزوس کو دنیا کے مال دار ترین افراد میں سے ایک بنا دیا تھا، اور ان کے اثاثوں کی مالیت 200 ارب ڈالر ہے۔

جیف بیزوس گزشتہ ماہ سے ٹیکس نہ دینے کی وجہ سے خبروں کی زینت بنے ہوئے تھے، جس کی وجہ سے انھوں نے استعفی دینے کا فیصلہ کیا، بیزوس نے 2007 اور 2011 میں ٹیکس نہیں دیا تھا۔

ان کے ساتھ کام کرنے والے افراد کا کہنا ہے کہ بیزوس نہ تو اپنے کام کو لے کر خودغرض تھے اور نہ ہی لاپروا، یہ ان کے خلاف سازش تھی۔ جیف بیزوس ریٹائرمنٹ کے بعد خلائی سفر کریں گے۔

ایما زون دنیا کی سب سے بڑی آن لائن کاروباری کمپنی ہے، کرونا وبا کے دوران ایمازون کی آن لائن خریدو فروخت میں نمایاں اضافہ ہوا تھا، ایمازون پر دنیا بھر سے ہر قسم کے سامان کی خرید و فروخت ہوتی ہے اور انھوں نے صرف سال 2020 میں 386 ارب ڈالر کمائے جو کہ 2019 کے مقابلے میں 38 فی صد زیادہ تھے۔

ایمازون پر خرید و فروخت کے لیے دنیا بھر کے کم از کم 104 ممالک سیلرز لسٹ پر ہیں، ان ممالک کے شہری اور کاروباری افراد ایمازون کی ویب سائٹ پر اپنی مصنوعات فروخت کے لیے رکھ سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں