site
stats
پاکستان

آئین بحال کرانے والے بھی ہم ہیں اور اس پر عمل بھی ہم ہی کرائیں گے، بلاول بھٹو

دبئی : پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ آئین بحال کرانے والے بھی ہم ہیں اور اس پر عمل بھی ہم ہی کرائیں گے، جب ایک بھٹو میدان میں اترتا ہے تو تمام اژدھوں اور گدہوں کے لیے بھاگنے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں بچتا۔

دبئی میں پیپلز پارٹی کے شریک چیرمین بلاول بھٹو زرداری کی زیر صدارت اہم اجلاس ہوا، جس میں بلاول بھٹو کے چار نکات، سابق صدر آصف علی زرداری کی واپسی اور محترمہ بے نظیر بھٹو کی برسی کے انتظامات پر غور کیا گیا۔

اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سابق صدر کو انتظامات کے حوالے سے بریفنگ دی۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ہم جمہوریت کے علمبردار ہیں اور اس کا استحکام چاہتے ہیں، جمہوریت کیلئے دی گئی قربانیوں کو رائیگاں جانے نہیں دیا جائے گا، پیپلزپارٹی نے آئین کو بحال کیا، آئین بنانے والے بھی ہم ہیں اس پر عمل ہم ہی کرائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سابق صدر افہام و تفہیم کی سیاست پر یقین رکھتے ہیں، ان کے چار مطالبات آئینی ہیں جن پر عمل کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے اور جو آئین کو نہیں مانتے اب ان کو لگ پتہ لگ ہی جائے گا۔

اس سے قبل پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پنجاب میں آخری مرحلہ کے بلدیاتی انتخابات کو ریاستی مشینری استعمال کرکے جائز اور ناجائز طور ہائی جیک کرنے کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے، خصوصاً رحیم یار خان میں پاکستان پیپلزپارٹی کی واضح اکثریت کو شکست میں بدل دیا گیا۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین نے کہا کہ مرکز اور پنجاب میں نوازلیگ حکومت کی زور زبردستی نے ایک بار پھر ”پاناما شریف“ کی بادشاہت کا مکروہ چہرہ کھول کے رکھ دیا ہے جو کہ اپوزیشن کو برداشت کرنے کو تیار نہیں، پنجاب کے محنت کشوں کی طرح وہ پورے ملک کو یرغمال رکھنا چاہتے ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ جس طرح اژدہا اپنے شکار کا حشر کرتا ہے، اسی طرح لوگوں کو ہڑپ کرنے کے لیے اپنے مذموم مقاصد حاصل کرنے کے لیے پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کے تمام عمل کو بے معنی مشق میں تبدیل کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی اور ان کے جیالوں اور ہمدردوں کی موجودگی میں اس قسم کے مذموم مقاصد کامیاب نہیں ہونگے کیونکہ جب ایک بھٹو میدان میں اترتا ہے تو تمام اژدھوں اور گدہوں کے لیے بھاگنے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں بچتا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top