The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف تصادم کی سیاست چھوڑیں پھرجمہوریت کی بات کریں، بلاول بھٹو

کراچی : پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ میرا میاں صاحب کو مشورہ ہے کہ تصادم کی سیاست چھوڑدیں تو میثاق جمہوریت پر بات ہو سکتی ہے، نواز شریف اور جمہوریت کا کوئی تعلق نہیں بنتا، میں وعدہ کرتاہوں نانا اور ماں کے نقش قدم پر چلوں گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے ساتھ ہاتھ نہ ملانے کو مسترد کرنے سے تشبیہ دینا مناسب نہیں، البتہ نواز شریف اپنے طورطریقے بدلیں تاکہ بات چیت کا ماحول پیدا ہوسکے۔

انہوں نے کہا کہ میاں صاحب اورجمہوریت کا کوئی تعلق نہیں بنتا، نواز شریف کے ساتھ ہمارے تجربے خوشگوار نہیں رہے کیونکہ میاں صاحب کہتے کچھ ہیں اور کرتے کچھ ہیں، ان کا یہ رویہ ملک میں پنپتی جمہوریت کوخطرے میں ڈال رہاہے، لہٰذا ان کو میرا مشورہ ہے کہ میاں صاحب تصادم کی سیاست چھوڑیں پھر میثاق جمہوریت پر بات کریں۔

بلاول بھٹو کا مزید کہنا تھا کہ سازش کے تحت کراچی پر لسانیت تھوپی گئی، شہر میں تعلیم نہ ہونے کے برابر ہوگئی ہے، بےروزگاری میں بھی اضافہ ہوا، شہر قائد کیخلاف سازش کرنیوالوں نے بھتہ خوری، دہشت گردی، اسٹریٹ کرائم کو کراچی کی پہچان بنادیا۔

ان کا کہنا تتھا کہ کراچی والوں کی قسمت میں ہمیشہ خوف میں رہنا نہیں لکھا، ہم کراچی کو بدلیں گےاور بدلتے ہی جائیں گے، کراچی میں ہر رنگ و نسل کے لوگ بستے ہیں،اسی لیے اسے منی پاکستان کہا جاتا ہے، اس شہر کے لوگوں نے جمہوری تحریکوں میں بڑھ چڑھ کرحصہ لیا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ گزشتہ دو ضمنی انتخابات میں کراچی والوں نے پی پی پر اعتماد کا اظہارکیا، کراچی میرا شہر ہے،اس کے دکھ اور سکھ میرے ہیں، کراچی روشنیوں کاشہرکہلاتا تھا، اس کا کھویا ہوا مقام واپس دلائیں گے۔

کراچی سےجرائم کاخاتمہ اورلسانی ومذہبی تقسیم ختم کریں گے، ہم ثابت کریں گے کہ کراچی میں تباہی وبربادی کادورختم اور ترقی کا دور شروع ہوگیا۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی رنگ ونسل کی بنیاد پر لوگوں کو تقسیم نہیں کرتی، میں وعدہ کرتا ہوں کہ اپنے نانا شہید ذوالفقار علی بھٹو اور والدہ کے نقش قدم پر چلوں گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں