The news is by your side.

Advertisement

بل گیٹس کا بڑا اعلان

نیویارک: مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس نے اعلیٰ درجے کا ایٹمی ری ایکٹر پلانٹ بنانے کا اعلان کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی ریاست وائیومنگ کے گورنر نے بدھ کو بتایا کہ بل گیٹس کی ایٹمی ری ایکٹر کمپنی ٹیراپاور اور پیسفی کارپ نے مشترکہ طور پر اپنے پہلے نیٹریم ری ایکٹر منصوبے کی تعمیر کے لیے وائیومنگ کا انتخاب کر لیا ہے، یہ پلانٹ کوئلے کے ایک ریٹائرڈ پلانٹ پر بنایا جائے گا۔

میڈیارپورٹس کے مطابق ٹیرا پاور ایل ایل سی اور پیسفی کارپ سال کے آخر تک نیٹریم ری ایکٹر پلانٹ کی سائٹ کا اعلان کر دیں گے، ریاست وائیومنگ کے گورنر مارک گورڈن نے اس منصوبے کے بارے میں کہا کہ کوئلے کا استعمال ختم کرنے کے لیے یہ سب سے تیز اور شفاف طریقہ ہے۔

خیال رہے کہ عام ری ایکٹرز کے مقابلے میں اعلیٰ درجے کے چھوٹے ری ایکٹرز کو چلانے کے لیے مختلف قسم کے ایندھنوں کا استعمال کیا جاتا ہے، ہوا اور شمسی توانائی کی طرح اعلیٰ درجے کے چھوٹے ری ایکٹرز کا شمار بھی ایسی ٹیکنالوجی میں ہوتا ہے، جس کے استعمال میں کاربن کے اخراج کی ضرورت نہیں پڑتی۔

امریکا کی بیش تر ریاستیں ماحولیاتی تبدیلیوں کا سبب بننے والے مواد کے اخراج میں کمی لانے کی کوشش کر رہی ہیں، جب کہ وائیومنگ کا شمار سب سے زیادہ کوئلہ پیدا کرنے والی امریکی ریاستوں میں ہوتا ہے۔

ٹیرا پاور کمپنی نے گزشتہ برس کہا تھا کہ نیٹریم ری ایکٹر پلانٹ کی تعمیر پر ایک ارب ڈالر کی لاگت آئے گی، تاہم اس منصوبے کے ذریعے 500 میگا واٹ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے، امریکی محکمہ توانائی نے ٹیرا پاور کو گزشتہ برس نیٹریم ٹیکنالوجی کے لیے 80 ملین ڈالر کی رقم بھی دی تھی۔

ٹیرا پاور کے صدر کرس لیوسک کے مطابق پلانٹ کے بننے میں تقریباً 7 سال کا عرصہ لگے گا، اور اس کی وجہ سے جوہری فضلے کی مقدار میں کمی آئے گی، دوسری طرف جوہری توانائی کے ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ عام ری ایکٹرز کے مقابلے میں اعلیٰ درجے کے ری ایکٹرز زیادہ خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں، کیوں کہ ان میں استعمال ہونے والے ایندھن کی زیادہ رفتار پر افزودگی کی جاتی ہے، جو شدت پسندوں کا نشانہ بن سکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں